وزیر اعظم اور وزیر اعلیٰ اپنی ناکامی کو قبول کرے اور عوام سے معافی مانگے:عارف مسعود


بھوپال:14اپریل(نیانظریہ بیورو)
راجدھانی کے مرکزی اسمبلی حلقے سے کانگریس ایم ایل اے عارف مسعود نے آج جاری ایک بیان میں کہا کہ وزیر اعظم نریندرمودی اورمدھیہ پردیش کے وزیر اعلیٰ کواپنی ناکامی پرملک کی عوام سے معافی مانگنی چاہئے۔انہوں نے کہا کہ آپ نے 3 مئی تک لاک ڈاو¿ن بڑھادیاہے ۔ جبکہ پورا ملک پہلے بھی آپ کے ساتھ تھا اور آج بھی ہے ، ملک اس کورونا جیسی وبا سے بچنے کے لئے ہر طرح سے تیار ہے۔ اس معاملے میں ملک کی تمام سیاسی جماعتیں ، تمام مختلف نظریات کے لوگ بھی ساتھ ہیں ، لیکن آپ نے عوام کی ضرورت پردھیان نہیں دیا۔ جس کے لوگ متمنی ہیں۔ انہون نے کہا کہ میرا وزیر اعظم اور وزیر اعلی شیوراج سنگھ چوہان سے سوال ہے کہ مرکزی اور ریاستی حکومت نے عوام کو اس برے حالات میں کیا دیا ، صرف5 کلو آٹا کافی نہیںہے ، کیا یہ 5 کلو آٹا ان کی مدد کرے گا؟ وہ بھی تمام لوگوں کو نہیں دیا جارہا ہے۔عارف مسعود نے کہا کہ میں وزیراعظم اورریاست کے وزیراعلیٰ کی توجہ اس جانب مبذول کرانا چاہتا ہوں۔ مسعود نے یہ سوال بھی اٹھایا کہ صفائی کرنے والے ملازمین کو جو کٹس دی جانے والی تھیں ان کے لئے سرکاری خزانے سے پیسہ نہیں نکلا ، جوپیسے ان کے لئے مختص کیے گئے تھے کیاان پیسوں سے صفائی کارکنان ، پولیس اہلکاروں ، ڈاکٹروں کوکیاآج تک کٹ دی گئی ۔ ظاہرہے نہیں دی گئی ہے ۔اس وقت ڈیوٹی کررہے ملازمین کوبھی کافی دشواریوں سے گزرناپڑرہاہے۔ عارف مسعود نے وزیر اعظم اور وزیراعلیٰ سے سوال پوچھتے ہوئے کہا کہ کیاابھی تک ریاست میں کورونا ٹیسٹنگ کا کوئی نظام موجود ہے؟ انہوں نے کہا کہ جب شہروں کایہ حال ہے تو دیہی علاقوں میں صورتحال کتنی خراب ہوگی۔ مسعود نے یہ بھی سوال اٹھایاکہ کورونا کے نمونوں کی رپورٹ 5 سے 7 دنوں میں آرہی ہے۔ اگر متعلقہ شخص مثبت پایا جاتا ہے ، تو پھران کے رابطے میں آئے لوگوں کی تلاش کس طرح ممکن ہے۔کیاحکومت نے اس کاکوئی بھی انتظام کیاہے۔ انہوں نے مزیدکہا کہ حکومت اپنی ناکامی کو قبول کرے اور عوام سے معافی مانگے۔ کیوں کہ حکومت کی نیت صاف نہیں لگ رہی ہے۔