لاک ڈاون میں مزیدسختی:


پولیس پر حملے کے بعد حساس علاقوں میں جوانوں کی تعیناتی میں اضافہ
بھوپال:9اپریل(نیانظریہ بیورو)
راجدھانی بھوپال کے تھانہ تلیاعلاقے واقع حال ہی میں پولیس اہلکاروں پرکچھ بدمعاشوں نے حملہ کیاتھا۔ جس کے بعد سکیورٹی سسٹم پر سوالیہ نشان کھڑا کردیا گیا۔ اسی کے ساتھ پولیس نے بدمعاشوں کو بھی گرفتار کرلیا ہے ، لیکن پولیس سسٹم ابھی بھی حساس علاقے میں موجود ہے ، جس کی وجہ سے اب اعلیٰ افسران پولس اہلکاروں کی حفاظت میں زیادہ سخت نظرآرہے ہیں۔بتایاجاتاہے کہ راجدھانی کے پرانے شہر میں ،حساس علاقوں میں پولیس اہلکاروں کی تعداد میں اضافہ کیا گیا ہے۔ ایس پی شیلندر سنگھ چوہان نے بتایا کہ پولیس ملازمین پر حملہ اچانک بڑھ گیا ہے۔ جس کے بعد کچھ علاقوں میں پولیس ملازمین کی تعداد بڑھا دی گئی ہے۔ اسی کے ساتھ ، مشکوک اورحساس علاقوں کی نشاندہی کی جارہی ہے اور وہاں بھی پولیس فورس بڑھا دیا گیا ہے۔ اعلی افسران کی ذمہ داری ہے کہ وہ پولیس ملازمین کی حفاظت پر توجہ دیں اور اعلی افسران اپنی سیکیورٹی میں مصروف ہیں اور اپنے دوسرے انتظامات بھی کررہے ہیں۔غورطلب ہے کہ مدھیہ پردیش کے مختلف اضلاع سے پولیس پر حملے کے واقعات سامنے آرہے ہیں ، جس کی وجہ سے پولیس کے نظام اور سیکیورٹی پر سوالات اٹھ رہے ہیں۔ اس کے پیش نظر ، اعلی افسران ملازمین کی حفاظت میں مزید سختی کررہے ہیں تاکہ اس طرح کے واقعات دوبارہ پیش نہ آئے۔