لاک ڈاون کے دوران جرائم میںآئی کمی


اُجین 03اپریل (نیا نظریہ بیورو) کورونا کے مد نظر ملک میں 14اپریل تک لاک ڈا¶ن کا اعلان کر دیا گیا ہے۔ اس وجہ سے لوگوں کو اپنے گھروں میں ہی رہنا پڑ رہا ہے۔ سڑکوں پر صرف وہ لوگ نظر آ رہے ہیں جنہیں بہت ضروری کام سے گھر سے باہر نکلنا پڑ رہا ہو۔ اس بعد بھی انہیں سڑکوں پر بہت بار پولیس کے جوانوں کی طرف رو ک دیا جاتا ہے ۔اس لئے زیادہ تر لوگ بہت زیادہ ضروری ہونے پر ہی باہر نکل رہے ہیں ۔اس لاک ڈا¶ن کے درمیان ایک اچھی خبر یہ سامنے آ رہی ہے کہ ان دنوں شہر کے بہت سے تھانوں میں کیس درج نہیں ہو رہے ہیں۔ پہلے جہاں ہر تھانے میں روز قریب 5 سے 6 معاملات تک درج ہوتے تھے۔ وہاں پر صورتحال صفر پہنچ چکی ہے۔ لاک ڈا¶ن کے ان آٹھ دنوں میں ایک – دو تھانوں کو چھوڑ کر ضلع میں کہیں کوئی جرائم کی رپورٹ تک نہیں ہوئی ہے۔ گرچہ کوروناوائرس کی رو ک تھام کے لئے پولیس جوانوں کو 24 گھنٹے اپنی خدمات شہری حدود کے ساتھ شہر کی بھیڑ کوکنٹرول کرنے کے لئے دینی پڑ رہی ہے۔ عموماً لاک ڈا¶ن کے سبب شہر کی مجرمانہ واقعات کے گراف میں کمی آئی ہے۔ لاک ڈا¶ن کے چلتے ضلع بھر میں مجرمانہ واقعات میں کمی دیکھنے میں آئی ہے۔ نیل گنگا پولیس اسٹیشن میں قتل کا صرف ایک بڑا کیس درج کرایا گیا ہے ۔ مادھونگر تھانہ علاقے میں 4 – 5 کیس عام مارپیٹ اور 6 کیس سیکشن 188 کے درج ہوئے ہیں۔ تھانہ دےواس گےٹ علاقے میں 5 کیس غیر قانونی طور سے گھومتے لوگوں پر درج کئے گئے ہیں ، ناگجھیری کوتوالی سمیت خواتین تھانے میں جرائم کی تعداد صفر ہے۔ وہیں تھانہ چمن گنج اور ناناکھےڑا میں صرف ایک ایک معاملہ ہی درج ہوئے ہیں۔ فی الحال شہر کے دیگر تمام تھانوں میں بھی امن کا ماحول بنا ہوا ہے۔ کوئی بڑا معاملہ تھانے میں نہیں آیا ۔ صرف غیر قانونی طور سے گھومتے لوگوں کے اوپر کیس درج ہوئے ہیں۔ آدھے سے زیادہ لوگوں کو سمجھا کر چھوڑ دیا گیا ہے۔ مذکورہ معلومات پرتھوی سنگھ ، ٹی آئی ، دیواس گیٹ نے فراہم کی ۔