سروجنی نائیڈو گرلز کالج میںرائٹ ٹو انفارمیشن ایکٹ پر منعقد ہوئی ورکشاپ

بھوپال11فروری(نیا نظریہ بیورو)سروجنی نائیڈو گورنمنٹ گرلز پوسٹ گریجویٹ کالج شیواجی نگر میں آج11فروری کو رائٹ ٹو انفارمیشن ایکٹ پر ایک روزہ ورکشاپ کا انعقاد کیا گیا۔ اس ورکشاپ کا اہتمام آر سی وی پی نرونہا اکیڈمی آف ایڈمنسٹریشن نے کالج میں طالبات، تعلیمی عملے، دفتری عملے کو معلومات دینے کے لیے کیا۔بطور مہمان خصوصی سونالی پوکشن وائنگڈکر ڈائریکٹر اکیڈمی آف ایڈمنسٹریشن، ایڈیشنل کمشنر ہائر ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ اور نوڈل آفیسر ایڈمنسٹریشن اکیڈمی، ڈاکٹر پرمود چترویدی اور کالج کی پرنسپل ڈاکٹر پرتبھا سنگھ موجود تھیں۔مہمان خصوصی نے کہا کہ یہ ورکشاپ آر ٹی آئی کو لوگوں تک پہنچانے کی کوشش کے لئے کی جارہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ آر ٹی آئی ایکٹ ایسی سہولت ہے کہ ہندوستان کے شہری ہونے کے ناطے ہم کسی بھی قسم کی معلومات حاصل کر سکتے ہیں۔تو یہ ہمارے لیے ایک ہتھیار ہے، اس ایکٹ کو عوامی مفاد کے لیے اور اپنی صوابدید کے ساتھ کامیابی سے استعمال کیا جا سکتا ہے۔آپ نے طالبات کو اخلاقی اور قدر پر مبنی کوششوں کے ذریعے ترقی کرنے کی ترغیب دی۔

 اس موقع پر تشریف لائے ڈاکٹر پرمود چترویدی نے سب سے پہلے کالج میں اس تقریب کے انعقاد پر اظہار تشکر کیا۔انہوں نے بتایا کہ ایکٹ2005 میںبنایا گیا تھا اور جمہوری ہندوستان کے شہریوں کو دوسری آزادی دینی ہے۔یہ سب کو ذمہ داری سے آگاہ کرنا ہے۔ کالج کی پرنسپل نے اس تقریب کے لیے خوشی کا اظہار کرتے ہوئے مہمانوں کو کالج کی کثیر جہتی ترقی کے بارے میں بتاےا۔انہوں نے کہا کہ کالج مختلف شعبوں میں مسلسل ترقی کی منازل طے کر رہا ہے اور آج نوجوانوں کو شفافیت، ذمہ داری اور قومی مفاد کو مدنظر رکھتے ہوئے کام کرنے کی ضرورت ہے۔

اس موقع پر انسانی قدر اور اخلاقی اوصاف پر مبنی کتاب کا اجراءکیا گیا۔جسے ڈاکٹر وینا دانی نے تیار کیا تھا۔آئی قیو اے سی انچارج ڈاکٹر شیل بالا سنگھ بگھیل بھی اس موقع پر موجود تھیں۔

 جنہوں نے ایک مختصر دستاویزی فلم کے ذریعے طالبات کو ان کے معلومات کے حق سے آگاہ کیا۔انہوں نے کہا کہ حکومت ہند اور ریاستی حکومت عام لوگوں، طالبات اور میڈیا کو معلومات کے حق کے قانون سے آگاہ کرتی ہے۔اس موقع پر کالج کی رائٹ ٹو انفارمیشن کمیٹی کی کنوینر ڈاکٹر پریتی پچوری اور ایڈمنسٹریٹو آفیسر ڈاکٹر اشوک نیما، تمام اساتذہ ممبران اور طالبات کی کثیر تعداد موجود تھی۔ ڈاکٹر کمود شریواستو نے پروگرام کی نظامت کی۔