یلو اسپتال کا تصور ہوا ختم: تمام اسپتالوں میں ہر مر ض کا ہو گا علاج


اُجین 30 اپریل(نیا نظریہ بیورو)ریاستی حکومت کی ہدایت کے مطابق کلکٹر جناب ششانک مشرا نے ایک حکم جاری کیا ہے اور اس سے پہلے ہی اُجین شہر میں یلو اسپتال کے لئے جاری کردہ آرڈر کو منسوخ کردیا ہے۔ اب ، اُجین شہر اور ضلع کے تمام پرائیویٹ اور سرکاری اسپتالوں میں ہر قسم کے مریضوں کا علاج کیا جاسکتا ہے۔کلکٹر نے احکامات جاری کیے ہیں کہ اس کے تحت کوئی بھی شخص کسی بھی علاقے سے آیا ہو اسپتال اس کو علاج دینے سے منع نہیں کر سکتا ہے ۔تمام اسپتالوں میںداخلہ کے وقت مریضوں کے سردی ، کھانسی کی اسکریننگ کریں گے ۔ ا
س کے لئے علیحدہ سے منی او پی ڈی تشکیل دی جائے گی۔ تحقیقات کے بعد ، ڈاکٹر فیصلہ کریں گے کہ کیا سردی کھانسی میں مبتلا شخص کو کورونا وائرس کا شبہ ہے۔ اگر مریض مشکوک حالت میں پایا جاتا ہے تو ، اسے ریڈ اسپتال (مادھو نگر اور آر ڈی گارڈی اسپتال) بھیج دیا جائے گا۔ اس سلسلے میں تمام پرائیویٹ اسپتالوں کو ہدایات جاری کرتے ہوئے یہ بھی کہا گیا ہے کہ وہ اپنے مریضوں کا مناسب علاج کریں گے اور کسی مریض کا علاج کرنے سے انکار نہیں کریں گے۔ اگر ایسی کوئی شکایت آتی ہے تو ان کے خلاف ضروری خدمات کی بحالی و دیگر ایکٹ کے تحت کارروائی کی جائے گی۔ کلکٹر نے بتایا ہے کہ کوویڈ 19 کے مریضوں کے علاج سے متعلق ریاستی حکومت کے جاری کردہ پروٹوکال کے مطابق ، تمام اسپتالوں میں ماسک پہننے ، سینیٹائزر استعمال کرنے اور معاشرتی فاصلے کے قواعد پر عمل کرنے کی ضرورت ہوگی۔