بڑھ نگر میں ایک ہی کنبہ کے 50 لوگوں کو کیا کوارنٹائن

کوروناکا قہر :

ڈاکٹروں نے 16 لوگوں کو اندور کیا ریفر
شیوا جی مارگ ہوا سیل
بڑھ نگر26 اپریل (نیا نظریہ بیورو) بڑھ نگر کے بھیڑ بھاڑ والے علاقہ شیواجی مارگ چارو جانب سے سیل کر دیا گیا ہے۔ یہاں رہنے والے ایک حکیم خاندان کے چھ لوگوں کی موت ہو چکی ہے۔ ان میں سے دو کی موت کوروناسے ہونے کی تصدیق ہوئی ہے۔ ایس ڈی ایم ایکتا جیسوال نے بتایا کہ بڑھ نگر میں تین کوارنٹائن سینٹر بنائے گئے ہیں۔ دو سینٹروں میں 19-19 لوگوں کو رکھا گیا ہے ، جبکہ ایک سینٹر میں 30 لوگوں کو رکھا گیا ہے۔ حکیم خاندان کے 50 لوگوں کو کوار نٹائن کیا گیا ہے۔ اس خاندان کے 16 لوگوں کو اندور علاج کے لئے بھیجا گیا ہے۔حکیم خاندان میں پہلی موت 30 مارچ کو ہوئی تھی۔ تب کورونامتاثرہ کی جانچ نہیں ہوئی تھی۔ خاندان نے اسے عام موت سمجھا تھا۔ آٹھ دن بعد ہی خاندان کے دوسرے رکن نیلیش کی بھی موت ہو گئی۔ اس دوران پورے صوبہ میں کورونا کا قہر پھیل چکا تھا۔ نیلےش کی جانچ کرائی گئی تھی۔ رپورٹ ان موت کے بعد آئی ، جو منفی تھی۔ اس بعد خاندان میں موت کا سلسلہ چل پڑا۔ 20 اپریل کو تیسری موت ہوئی۔ اس کے بعد تین موت اور ہو گئی۔ بتایا جاتا ہے کہ نیلےش کپڑے خریدنے کے لئے اندور سمیت دیگر شہروں میں گئے ہوئے تھے ، وہیں سے وہ کورو نا کی زد میں آگئے تھے ۔
گھر – گھر دستک دے رہی ہے صحت ٹیم
حالات سنگین نہ ہوں اس کے لئے انتظامیہ جی توڑ محنت کر رہا ہے۔ دو دن سے صبح سے ہی اس علاقے میں انتظامیہ کی ٹیم پہنچ جاتی ہے۔ لوگوں کو گھروں میں رہنے اور بیمار افرادکی معلومات دینے کے ہدایات دی جا ر ہی ہے ۔ ہر گھر میں دستک دے کر آگاہ کیا جا رہا ہے کہ کوئی بھی بیماری کی علامات کو نہ چھپائے ۔ ہر عمر کے لوگوں کے اعداد و شمار جمع کیے جا رہے ہیں۔ ہاٹ اسپاٹ میں شامل اندور میں مرکزی ٹیم نے دورہ کرنے کے بعد رپورٹ تیار کر لی ہے۔ مرکز ی حکومت کو بھیجی رپورٹ میں ٹیم نے کریٹکل ژون ، کٹےنمےٹ علاقوں اور لاک ڈا¶ن کو لے کر نکات در نکات باتیں لکھی ہیں۔ کچھ میں بہتری تو کچھ میں بہتر کام کرنے کی بات کہی گئی ہے۔ مرکزی ٹیم کے سربراہ اور اضافی سیکرٹری ابھیلکشیہ لکھی نے اس پہلے ہفتہ کو ویڈیو کانفرنسنگ سے ہاٹ اسپاٹ میں تعینات انسی ڈنٹ کمانڈروں سے بات کی تھی اور پوچھا کہ وہ کس طرح انتظامات سنبھال رہے ہیں۔ رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ 171 علاقوں کو کنٹےنمےٹ قرار دیا گیا ہے ، جن میں سے 20 ژون حساس ہیں۔ شہر میں لاک ڈا¶ن پر عمل ٹھیک – ٹھاک ہے۔ نمونوں اور ٹیسٹنگ کو مزیدبڑھانے کی ضرورت ہے۔وہیں ، ہفتہ کو ایم وائی ایچ میں حال ہی میں جاری 56 مریضوں کی جانچ رپورٹ میں تین میل نرس بھی شامل ہیں۔ بتایا جا رہا ہے کہ ان ڈیوٹی کو ویڈ وارڈ میں لگی تھی۔ فی الحال تینوں کو ایم آر ٹی بی اسپتال میں بھرتی کرایا گیا ہے۔