Naya Nazariya Urdu Daily from Ujjain

بی جے پی اور شیوسینا میں اب کوئی من مٹاؤ نہیں:ادھو ٹھاکرے

Thumb

احمد آباد، 30 مارچ (یواین آئی) شیو سینا سربراہ ادھو ٹھاکرے نے آج کہا کہ ان کی پارٹی اور بی جے پی کے نظریات ایک ہیں اور دونوں کے درمیان جو تلخی اور من مٹاؤ ہوا تھا وہ اب مکمل طورسے ختم ہو چکا ہے۔

مسٹر ٹھاکرے نے آج یہاں بی جے پی صدر امت شاہ کے گاندھی نگر سیٹ پر نامزدگی کے کاغذات داخل کرنے سے پہلے احمد آباد کے سردار پٹیل چوک پر ہونے والی ریلی میں اپوزیشن پارٹیوں پر حملہ کرتے ہوئے کہا کہ ایک نظریہ والی دو پارٹیوں کے لڑنے جھگڑنے سے کچھ لوگ خوشی منا رہے تھے۔
انہوں نے کہا’’کچھ لوگوں کو میرے یہاں پہنچنے سے خوشی ہو ئی لیکن کچھ کو پیٹ میں درد ہو رہا ہو گا. کچھ لوگ خوشی منا رہے تھے کہ یکساں خیالات و نظریات رکھنے والی پارٹیاں لڑ جھگڑ رہی تھیں۔ ہم میں تلخی اور من مٹاؤ ضرور تھا ،جب امیت بھائی میرے گھر آئے اور بات ہوئی تو یہ سب ختم ہو گیا۔ شیوسینا اور بی جے پی کے نظریات ایک ہیں ،جو ہندوتو ہے. میرے والد (آنجہانی بالا صاحب ٹھاکرے) کہتے تھے کہ ہندوتو ہماری سانس ہے۔یہ رک جائے تو کس طرح چل سکتے ہیں‘‘۔
انہوں نے کہا کہ اپوزیشن کے اتحاد میں دل ملے یا نہ ملے وہ ہاتھ ملا رہے ہیں لیکن بی جے پی شیوسینا کا دل مل گیا ہے۔ ٹھاکرے نے کہا’’ہم نے یہی سوچا کہ گزشتہ پانچ سال میں جو ہوا سوہوا. لیکن اس سے گزشتہ 25 سے 30 سال میں کیا ہو رہا تھا. اکالی دل کو چھوڑ کر دیگر تمام پارٹیاں بی جے پی اور شیوسینا کو اچھوت مانتے تھے۔ پتہ نہیں کس طرح 25 سال گزر گیا۔ 

 

Ads