Naya Nazariya Urdu Daily from Ujjain

پاکستان نے پلوامہ حملے کی تحقیقات کے لئے ہندوستان سے مانگے مزید ثبوت

Thumb

اسلام آباد، 27 مارچ (یو این آئی) پاکستان نے آج کہا کہ وہ جموں کشمیر کے پلوامہ میں 14 فروری کو مرکزی ریزرو پولیس فورس کے قافلے پر ہوئے فدائین دہشت گردانہ حملے کے بارے میں ہندوستان کے ڈوزير کی بنیاد پر پوری ذمہ داری سے تحقیقات کر رہا ہے اور اس نے ہندوستان سے اس بارے میں مزید ثبوت مہیا کرانے کو کہا ہے۔ 

پاکستانی وزارت خارجہ نے بدھ کے روز یہاں جاری ایک ریلیز میں کہا کہ پاکستان حکومت نے پلوامہ حملے پر ہندوستان کی رپورٹ کی بنیاد پر تحقیقات کرنے کے بعد ابتدائی نتائج حکومت ہند کے ساتھ مشترک کئے ہیں۔ خارجہ سکریٹری تهمينا جنجوا نے ہندوستان کے ہائی کمشنر اجے بساريا کو طلب کیا اور انہیں پلوامہ کے بارے میں نتائج کی رپورٹ سونپ دی۔ 
پاکستانی وزارت خارجہ نے بیان میں کہا کہ وہ اس سلسلے میں پوری ذمہ داری کے ساتھ کام کر رہا ہے اور ہندوستان کے ساتھ مکمل تعاون کر رہا ہے۔ بیان میں کہا گیا کہ ’’ہم علاقائی امن اور سلامتی کی سمت میں کام کر رہے ہیں۔جانچ کے عمل کو آگے بڑھانے کے لئے ہم نے ہندوستان سے مزید اطلاعات اور شواہد مہیا کرانے کا مطالبہ کیا ہے۔‘‘َ
ہندوستن نے 27 فروری کو پاکستان کو پلوامہ حملے کے بارے میں ایک ڈوزير سونپا تھا۔ پاکستان کے وزیر اعظم عمران خان نے اس حملے کے بارے میں ہندوستان کے ساتھ تعاون کی پیشکش کی تھی اور قابل اعتماد ثبوت ملنے پر مناسب کارروائی کا یقین بھی دلایا تھا۔
پاکستانی وزارت خارجہ کے اس بیان پر ہندوستان حکومت کی طرف سے فوری طور پر کوئی رد عمل نہیں آیا ہے۔

 

 

 

Ads