Naya Nazariya Urdu Daily from Ujjain

لڑکیوں میں ڈپریشن کا خطرہ زیادہ،جانیں کیوں

Thumb

آج کا دور کمپیوٹراورٹیکنالوجی کاہے۔پوری دنیامیں زیادہ ترلوگ سوشل میڈیاکا استعمال کرتے ہیں۔جہاں سوشل میڈیاکا استعمال فائدہ مند ہے وہیں نقصاندہ بھی ہے۔ سوشل میڈیاجہاں ہمیں اپنوں کے قریب کرتاہے وہیں ہمیں اپنی فیملی سے دوربھی کر دیتا ہے۔دراصل ، نئی نسل سوشل میڈیا کا استعمال اس قدرکرتی ہیں کہ وہ اپنے فیملی کے ساتھ وقت گزارنا نہیں چاہتی ہیں،اتناہی نہیں ،سوشل میڈیاپرآج کل کے نوجوان لڑکے اورلڑکیاں اپنے دوستوں کے ساتھ چیٹنگ ،میسیجنگ کے ساتھ ساتھ دیگرچیزیں دیکھنے میں لگے رہتے ہیں، جس بناکروہ سونہیں پاتے ہیں۔یااگرسوبھی جاتے ہیں تو اس کا دل ودماغ سوشل میڈیا پر رہتاہے۔جس کے باعث وہ ڈپریشن کا شکارہوجاتاہے۔سوشل میڈیا پرزیادہ وقت گزرنے سے ڈپریشن (ذہنی تناو¿ یادباو¿)کا خطرہ ہونے کی بات بہت سے ریسرچ میں سامنے آچکی ہیں،لیکن آب ایک نئی تحقیق میں دعویٰ کیاگیا ہے کہ سوشل میڈیا کے زیادہ استعمال سے لڑکوں کے مقابلے لڑکیوں میں ڈپریشن کا زیادہ خطرہ ہوتا ہے۔دراصل ،برطانیہ کی یونیورسٹی لندن نے 14سال کے 11ہزارلڑکے لڑکیوں کا ڈیٹا کاتجزیہ کیا۔اس تحقیق میں سامنے آیا ہے کہ جو لڑکیاں روزانہ5گھنٹے سے زیادہ وقت سوشل میڈیا پر گزارتی ہیں، ان میں سے 40فیصدلڑکیوں میں ڈپریشن کی علامات دکھائی دی جبکہ اتنا ہی وقت لڑکوں میں صرف 15فیصدمیں ہی ڈپریشن کا خطرہ دکھا۔یونیورسٹی کے پروفسرونّو کیلی نے بتایا کہ لڑکوں کے مقابلے میں لڑکیاں سوشل میڈیا کا زیادہ استعمال کرتی ہیں،ساتھ ہی لڑکیوں میں ڈپریشن کی علامات بھی لڑکوں سے زیادہ ہے۔اس تحقیق میں سامنے آیا ہے کہ 5میں سے 2لڑکیاں روزانہ تین گھنٹے سے زیادہ سوشل میڈیا کا استعمال کرتی ہیں،جبکہ 5میں سے ایک لڑکا ہی اتنی دیر تک سوشل میڈیا کا استعمال کرتا ہے۔وہیں سروے میں شامل10فیصدلڑکوں نے مانا کہ وہ سوشل میڈیاکا بالکل استعمال نہیں کرتے جبکہ صرف 4فیصد لڑکیاں نے ہی اس بات کو مانا۔تحقیق کے مطابق،14سال کی 7.5فیصدلڑکیاں اور 4.3فیصدلڑکے آن لائن ہراسمنٹ کا شکار ہوتے ہیں جبکہ 17.4فیصدلڑکوں کے مقابلے35.6فیصدلڑکیوں نے خود کو ڈپریشن مانا۔اس کے علاوہ سوشل میڈیا پر 32.8فیصدلڑکیوں اور 7.9فیصد لڑکے آن لائن بولنگ کا شکار ہوتے ہیں۔اسکے علاوہ، اس تحقیق میں یہ بھی سامنے آیا ہے کہ سوشل میڈیا کا زیادہ استعمال ہماری نیند پر بھی اثر پڑتا ہے۔سروے میں شامل5.4فیصد لڑکیاں اور 2.7فصیدلڑکوں نے کہا کہ وہ 7گھنٹے سے کم سوتے ہیں۔

 

Ads