بھوپال کے راتی بڑھ تھانے میں تعینات پولس کانسٹبلنے خودکوماری گولی


بھوپال:14اپریل(نیانظریہ بیورو)
پورے ملک میں جہاں کوروناکی وجہ سے لاک ڈاو¿ن جاری ہے ۔وہیںآج وزیراعظم نے عوام سے اپیل کرتے ہوئے اس لاک ڈاو¿ن میں19دن کی توسیع کردی ہے۔گزشتہ 21دنوں سے ڈیوٹی انجام دینے والے پولس اہلکار مسلسل اپنی ذمہ داری اداکررہے ہیں۔اس دوران مسلسل ڈیوٹی کرنے کی وجہ سے اب پولس اہلکاربھی تناو¿کے شکارہورہے ہیں۔آج راجدھانی میں ایساہی ایک واقعہ پیش آیا۔جہاں ایک پولیس اہلکار نے خود کو گولی مارلی۔ واقعے کے بعد اسے اسپتال میں داخل کرایا گیا ۔ جہاں اس کی حالت تشویشناک ہے۔ بتایا جارہا ہے کہ پولیس اہلکار نے خود کو گولی مارنے سے پہلے ہوا میں اندھا دھند فائرنگ بھی کی تھی،اس کے بعد خودکوگولی ماری۔معلومات کے مطابق راتی بڑ تھانے میں تعینات سپاہی چیتن ٹھاکر ڈیوٹی پر تھے۔ اچانک وہ سڑک پر آیا اور اندھا دھند فائرنگ شروع کردی اور فائرنگ کے بعد خود کو بھی گولی مارلی۔واقعے کے بعد پولیس موقع پر پہنچی اور شدید زخمی پولس اہلکار کو علاج کے لئے نجی اسپتال میں داخل کرایا۔ جہاں اس کی حالت تشویشناک بتائی جارہی ہے۔ بتایاجاتاہے کہ پولیس اہلکارچیتن کسی چیز سے بے حد پریشان تھا۔ لیکن انہوں نے یہ قدم کیوں اٹھایا اس کی وجہ اب تک سامنے نہیں آسکی ہے۔وہیں کچھ لوگوں کاکہناہے کہ مسلسل ڈیوٹی پررہنے سے وہ تناو¿ کاشکارہواہوگا۔جس کی وجہ سے انہوں نے یہ قدم اٹھایا۔بڑا سوال یہ ہے کہ پولیس اہلکار نے خود کو گولی مارنے سے قبل چوکی کے باہر اندھا دھند ہوامیںفائرنگ کیوںکی۔ جس کی وجہ سے دوسرے پولیس اہلکار بھی تھوڑی دیر کے لئے خوفزدہ ہوگئے۔ لیکن فوراً ہی پولیس اہلکار نے خود کو گولی مارلی۔اچانک اس طرح کامعاملہ سامنے آنے کے بعد موقع پرموجود پولس اہلکارنے فوری طورپراسے ایک نجی اسپتال میںد اخل کیا۔جہاں اس کی حالت سنگین ہے۔ایسااس نے کیوں کیا یہ کوئی سمجھ نہیں سکا۔ فی الحال ، پولیس اہلکار بھوپال کے نجی اسپتال میں زیر علاج ہے۔