دیگرریاستوں کی طرح ایم پی میں بھی پانی،بجلی کے بل ہوں معاف:پی سی شرما

دیگرریاستوں کی طرح ایم پی میں بھی پانی،بجلی کے بل ہوں معاف:پی سی شرما
بھوپال:13اپریل (نیانظریہ بیورو)
مدھیہ پردیش کانگریس کے سینئرلیڈر اور سابق وزیر پی سی شرما نے وزیراعلیٰ شیوراج سنگھ چوہان کو خط لکھا ہے ۔ جس میں انہوں نے کورونا قہر کے درمیان ریاست کے لوگوں کو دیگر ریاستوں کی طرح راحت دینے کا مطالبہ کیا ہے۔ خط میں انہوں نے عام لوگوں ،کسانوں کوکورونا وائرس کی اس مصیبت کی گھڑی میں راحت پہنچانے کی بات کہی ہے۔سابق وزیرنے اپنی رائے پیش کرتے ہوئے کہا کہ سبھی پرائیویٹ اور سرکاری ،کاروباری اور رہائشی مکانوں ودیگربلڈنگ میں رہنے والے افراد کے کرائے 6مہینے تک نہیںلئے جائیں ، یعنی کرایہ پررہنے والوں کاچھ ماہ تک کاکرایہ معاف کیاجائے۔ ایسا دہلی حکومت نے حکم جاری کیا ہے، مدھیہ پردیش حکومت بھی اسی طرح کاحکم جاری کرناچاہئے ۔ آربی آئی نے بھی ای ایم آئی ملتوی کردی ہے۔ وہیں انہوں نے تمام سرکاری اور پرائیویٹ اسکولوں کی تین مہینوں تک کی فیس معاف کرنے کا بھی مطالبہ کیا ہے۔ اس کے علاوہ 6مہینے کے لئے بجلی بل اور پانی بل اور پراپرٹی ٹیکس نہیں لیا جائے ۔ وہیں انہوں 4جون تک روڈ ٹیکس ، فٹنیس ٹیکس وغیرہ ملتوی کرنے کی بات کہی ہے۔ وزیراعلیٰ کو لکھے خط میں سابق وزیرپی سی شرما نے مطالبہ کیا ہے کہ ڈاکٹر ،نرس، پولس اور ضلع انتظامیہ اور دیگر سرکاری عملہ جو مسلسل 24گھنٹے عوامی خدمات میں مصروف ہیں، ان کی تنخواہ دوگنی کی جائے، یہ ہریانہ حکومت نے بھی کیا ہے۔ وہیں ہر شعبے میں نامزد گیہوں ،آٹا چکی والوں کو کام کرنے کی اجازت دی جائے۔ گیہوں کی خریدی کسانوں کو کھیت سے ہو اور بونس 160روپے فی کونٹل یکم اپریل سے کمل ناتھ کی حکومت نے کسانوں کے کھاتے میں ڈالنے پر منظوری دی تھی،اسے پورا کیا جائے۔ زرعی پیداوار کو منڈی میں خریداری کی اجازت کسانوں ،کاروباریوں کے نظم وضبط کی بنیاد پر جلد بحال کی جائے۔انہوں نے مطالبہ کیا ہے کہ مدھیہ پردیش حکومت کو کسانوں کے کوآپریٹیو کمیٹیوں کے کھاتوں کی وصولی کو ملتوی کرتے ہوئے ان کو 3سال کے لئے کنورشن میں ڈال دیا جائے اور کسان کی کے سی سی کو نئے سرے سے بنایاجائے۔