تین زرعی قوانین کو منسوخ کیا جائے گا، احتجاج کرنے والے کسان گھر واپس جائیں: وزیراعظم


نئی دہلی، 19 نومبر: وزیر اعظم نریندر مودی نے سکھوں کے پہلے گرو نانک دیو جی کے 552 ویں پرکاش پرو کے موقع پر ایک سال سے زیادہ عرصے سے احتجاج کرنے والے کسانوں کے مطالبے کو قبول کرتے ہوئے تین متنازعہ زرعی قوانین کو واپس لینے کا اعلان کیا اور احتجاج کرنے والے کسانوں سے گھر واپس جانے کی اپیل کی۔
مسٹر مودی نے جمعہ کی صبح قوم کے نام ایک پیغام میں کہا ’’اپنی پانچ دہائیوں کی زندگی میں، ہم نے کسانوں کے چیلنجوں کو بہت قریب سے دیکھا ہے، جب ملک نے ہمیں 2014 میں پردھان سیوک (وزیراعظم) کے طور پر خدمات انجام دینے کا موقع دیا، تو ہم نے زرعی ترقی، کسانوں کی فلاح و بہبود کو اولین ترجیح دی گئی۔
ملک کے چھوٹے کسانوں کو درپیش چیلنجوں پر قابو پانے کے لیے، ہم نے بیج، انشورنس، بازار اور بچت ان سبھی پر چوطرفہ کام کیا۔