اینٹی بائیوٹک آگاہی ہفتہ آج سے:


بیماری کی حالت میں اینٹی بائیوٹک کا استعمال کم کریں:وزیر پروبھورام چودھری
بھوپال18نومبر(نیا نظریہ بیورو)میڈیکل سائنس نے سنگین بیماری کا علاج ڈھونڈ لیا ہے۔ لیکن اب یہ پیش رفت مہلک ہوتی جا رہی ہے۔ اینٹی بایوٹکس کے زیادہ استعمال کی وجہ سے ادویات بیکار ہوتی جا رہی ہیں۔ اس کے بارے میںجمعرات کو ایم پی نیشنل ہیلتھ مشن میں وزیر صحت پربھرام چودھری نے عام لوگوں سے کم از کم اینٹی بائیوٹک کا استعمال کرنے کی اپیل کی۔ اس سے قبل تکنیکی کمیٹی برائے اینٹی مائکروبیل ریزسٹنس (اے ایم آر) اور اینٹی بائیوٹکس کے استعمال کا اجلاس ہوا۔ اس میں ویٹرنری، فوڈ اینڈ ڈرگ، اینیمل ہسبنڈری اور ڈیرینگ ڈپارٹمنٹ، ایگریکلچر، فارما ایسوسی ایشن، ایمس بھوپال، آئی ایم اے، آئی پی اے کے عہدیداروں نے حصہ لیا۔
اس موقع پر وزیر صحت نے عوام سے اپیل کرتے ہوئے کہا کہ اینٹی بائیوٹک ادویات کا استعمال کم سے کم اور طبی مشورے کے بعد ہی کریں۔ طبی مشورے کے بغیر دوا نہ خریدیں۔ انہوں نے کہا کہ اینٹی بائیوٹک ادویات کے زیادہ استعمال کی وجہ سے قوت مدافعت میں اضافہ ہو رہا ہے۔ انہوں نے عالمی ادارہ صحت کی رپورٹ کا حوالہ دیا کہ دنیا بھر میں جراثیم کش مزاحمت ہر سال 7 لاکھ اموات کا سبب بنتی ہے۔ اگر ہم ادویات کے استعمال کے لیے بیدار نہ ہوئے تو 2050 تک یہ تعداد 10 ملین سالانہ تک پہنچ سکتی ہے۔ انہوں نے ڈاکٹروں سے یہ بھی کہا کہ وہ مریض کو ضرورت کے مطابق اینٹی بائیوٹک تجویز کریں۔
وزیر صحت نے کہا کہ اس کے علاوہ لائیو سٹاک اور زراعت کے شعبے میں بھی اینٹی بائیوٹک کا استعمال تیزی سے بڑھ رہا ہے۔ نتیجتاً اینٹی بایوٹک ادویات بے اثر ہو رہی ہیں۔ اس کا اثر انسانی جسم پر بھی پڑتا ہے۔
نیشنل ہیلتھ مشن ریاست میں 18 سے 24 نومبر تک اینٹی بائیوٹک بیداری ہفتہ چلائے گا۔ اس میں ڈاکٹروں کو کم از کم اینٹی بائیوٹک ادویات تجویز کرنے کی تربیت دی جائے گی۔ اس کے لیے ضلعی اسپتالوں میں ایک ماسٹر ٹرینر موجود ہے۔ انفیکشن کنٹرول پروٹوکول کو مزید بہتر بنا کر اینٹی بائیوٹکس کے استعمال کو کم سے کم کرنے کے لیے آگاہی مہم چلائیں گے۔ اس کے ساتھ ہی اضلاع میں کیمپ لگا کر لوگوں کو آگاہ کیا جائے گا۔