ریاست میں بدلا موسم:


اندور سمیت 11 اضلاع میں بوندا باندی کا امکان، مندسور،نیمچ اور رتلام میں ہوئی بارش
بھوپال18نومبر(نیا نظریہ بیورو)بحیرہ عرب میں بننے والے کم دباو ¿ کے علاقے کی وجہ سے مدھیہ پردیش کا موسم اچانک بدل گیا ہے۔بادل چھانے سے دن کے وقت کا درجہ حرارت (تقریباً 28 °سیلسیس) سے قدرے گر گیا، جبکہ رات کا عام درجہ حرارت (13 ° سیلسیس) بڑھ کر 6 °سیلسیس تک پہنچ گیا۔
مندسور اور نیمچ میں آج صبح 11 بجے بارش ہوئی۔ دوپہر کو رتلام میں بھی پانی گرا۔ محکمہ موسمیات نے اندور سمیت 11 اضلاع میں شام تک ہلکی بارش کی پیش گوئی کی ہے جبکہ بھوپال میں بادل چھائے رہیں گے۔ ماہر موسمیات پی کے ساہا نے کہا کہ اگلے تین دن تک موسم ایسا ہی رہے گا۔ اندور، اُجین اور گوالیار-چمبل ڈوےژن میں ہلکی بارش کا امکان ہے۔ بھوپال میں مطلع جزوی طور پر ابر آلود رہے گا۔ اگر گہرے بادل بنتے ہیں تو بوندا باندی کے امکانات ہوں گے۔
پی کے ساہا نے کہا کہ بحیرہ عرب کے ساتھ مغربی ہوائیں چل رہی ہیں۔ اندور، اجین اور گوالیار-چمبل ڈوےژن سب سے زیادہ متاثر ہوئے ہیں۔ ان علاقوں میں آئندہ تین روز تک ہلکی سے درمیانی بارش ہوسکتی ہے۔ بادل چھائے رہنے سے درجہ حرارت بڑھ گیا ہے۔ اگلے تین دن تک دیکھا جائے گا۔ساہا نے کہا کہ تیز بارش کا کوئی امکان نہیں ہے لیکن اگر مسلسل بادل چھائے رہے تو بارش کے امکانات زیادہ ہو سکتے ہیں۔ بہت بارش ہوئی تو اچانک سردی بڑھ جائے گی۔
بحیرہ عرب کے ساتھ خلیج بنگال میں بھی آج سے کم دباو ¿ کا علاقہ بن رہا ہے۔ وہاں سے بادلوں کے آنے کا بھی امکان ہے۔ اس کا اثر بندیل کھنڈ، مہا کوشل اور بھوپال اور اس سے ملحقہ علاقوں پر زیادہ پڑے گا۔شام تک ریاست کے 11 اضلاع میں بارش متوقع ہے۔ محکمہ موسمیات کے مطابق اندور، دھار، رتلام، جھابوا، علی راج پور، بڑوانی اُجین، نیمچ، مندسور، شیوپورکلا اور مرینا میں چند مقامات پر ہلکی بارش ہوسکتی ہے۔ تاہم بجلی گرنے کا کوئی امکان نہیں ہے۔
ساہا نے کہا کہ دیوالی سے ایک دن پہلے ویسٹرن ڈسٹربنس آیا تھا۔ اس کی وجہ سے دیپاولی کے بعد سردی تھی لیکن اس کے بعد کوئی ویسٹرن ڈسٹربنس سرگرم نہیں ہوا۔ ایسے میں سردی پر وقفہ رہا۔ اب آج سے ایک ویسٹرن ڈسٹربنس آنے والا ہے۔ اس کے بعد سردی بڑھ سکتی ہے۔