دونوں ڈوز نہیںتو تنخواہ نہیں،اُجین کلکٹر نے جارے کئے احکامات


اُجین16نومبر(نیا نظریہ بیورو)جیسے جیسے کورونا کی دوسری خوراک کا التوا بڑھ رہا ہے، انتظامیہ بھی سختی کررہی ہے۔منگل کو کلکٹر آشیش سنگھ نے اُجین میں 100فیصد ویکسینیشن کے لیے ایک بڑا قدم اٹھایا ہے جس کے بعد دکانداروں کو سامان نہ دینے اور ہوٹل کے لاج میں داخلے پر پابندی لگانے کا حکم دیا ہے۔ تمام سرکاری ملازمین اور افسران کو نومبر کے مہینے میں ویکسینیشن سرٹیفکیٹ دکھانے کے بعد ہی تنخواہ ملے گی۔ جنہوں نے دوسری خوراک نہیں لگوائی انہیں سرکاری راشن بھی نہیں ملے گا۔ اُجین کلکٹر نے منگل کو ان لوگوں کے لیے یہ حکم جاری کیا جنہوں نے مقررہ تاریخ گزر جانے کے بعد بھی کورونا ویکسین کی دوسری خوراک نہیں لی ہے۔
اُجین میں 2.5 لاکھ لوگ ایسے ہیں جنہیں نومبر کے مہینے تک اپنی دوسری خوراک لینی تھی، لیکن مختلف بہانے بنا کر کئی ملازمین کو اب تک اپنی دوسری خوراک نہیں لگی ہے۔ 18 نومبر کو 1 لاکھ 36 ہزار ٹک لگانے کا ہدف مقرر کیا گیا ہے۔ ایسے لوگوں کی بھی بڑی تعداد ہے جنہوں نے اپنی ویکسینیشن کی دوسری خوراک مکمل نہیں کی ہے۔ اس سلسلے میں کلکٹر آشیش سنگھ نے ڈسٹرکٹ ٹریڑری آفیسر کو تنخواہ کے بل کے ساتھ ویکسینیشن سرٹیفکیٹ لینے کا بھی حکم دیا ہے۔
کلکٹر نے کہا کہ ان کے نوٹس میں آیا ہے کہ ابھی تک ضلع میں سرکاری ملازمین کو ویکسینیشن کی دوسری خوراک نہیں لگی ہے۔ نومبر کے ان تمام مہینوں کی تنخواہ صرف اس وقت جاری کی جانی چاہیے جب یہ سب اپنا حتمی سرٹیفکیٹ ظاہر کریں۔ اسی طرح راشن حاصل کرنے والے مستحقین کو بھی حکم دیا گیا ہے کہ جب تک دوسری خوراک نہیں لی جاتی، راشن دستیاب نہیں ہوگا۔
کلکٹر آشیش سنگھ نے کہا کہ ضلع کے تمام سرکاری ملازمین کسی بھی حالت میں 30 نومبر تک ٹیکہ کاری کی دوسری خوراک حاصل کریں۔ ضلع کے تمام محکموں کے افسران کو ہدایت کی گئی ہے کہ وہ ہر ملازم کی دوسری ویکسی نیشن ڈوز کی معلومات ڈسٹرکٹ ٹریڑری آفیسر کو فراہم کریں۔ ویکسینیشن سرٹیفکیٹ کے بغیر نومبر کے مہینے سے تنخواہ نہیں دی جائے گی۔
18 نومبر کو عظیم ویکسینیشن کے دن مہاکال مندر اور دیگر پجاریوں سے وابستہ ملازمین کو سرٹیفکیٹ کی جانچ کے بعد اسی دن ویکسین کی دوسری خوراک دی جائے گی۔ اس کے ساتھ ساتھ آنے والے عازمین کے لیے بھی یہی انتظام ہوگا۔
میونسپل کمشنر نے حکم جاری کیا اور منگل کو ہی دوسری خوراک نہ لگانے والے ملازمین کو دروازے پر ہی روک دیا۔ انہیں اس وقت تک اندر نہیں جانے دیا گیا جب تک کہ ویکسین کی دوسری خوراک کا سرٹیفکیٹ نہیں دکھایا۔ اس سلسلے میں ایک ملازم کو چینل گیٹ پر ہی کھڑا کر دیا گیا۔