اُجین سے اندور کے بیچ میمو ٹرین ہوئی شروع:


شنکر لالوانی،سمترا مہاجن اور آکاش وجئے ورگیہ نے اندور اسٹیشن پر ہری جھنڈی دکھا کر کیا روانہ
اندور15نومبر(نیا نظریہ بیورو)اندور تا اُجین براستہ فتح آباد نئی میمو ٹرین پیر کو شروع ہوئی۔ وزیر اعظم نریندر مودی نے بھوپال سے ٹرین کو عملی طور پر ہری جھنڈی دکھا کر روانہ کیا۔اس کے ساتھ ہی یہ ٹرین دوپہر میں اُجین اور اندور سے بیک وقت روانہ ہوئی۔ایم پی شنکر لالوانی، لوک سبھا کی سابق اسپیکر سمترا مہاجن اور ایم ایل اے آکاش وجئے ورگیہ نے اندور اسٹیشن پر جھنڈی دکھا کر روانہ کیا۔تاہم اس ٹرین کے چلنے سے روزانہ اپ ڈاو ¿ن کرنا بھی آسان ہو جائے گا۔وقت کے ساتھ ساتھ پیسے کی بھی بچت ہوگی۔تاہم یہ ٹرین منگل سے باقاعدگی سے چلے گی۔ریلوے انتظامیہ نے ٹرین کے آغاز کے لیے اندور ریلوے اسٹیشن پر انتظامات کیے تھے۔پیر کو وزیر اعظم مودی نے بھوپال کے کملا پتی اسٹیشن سے ان ٹرینوں کا ورچوئل آغاز کیا۔مودی نے کہا کہ یہ نئی ٹرین مہاکال کے شہر اُجین اور ملک کے سب سے صاف ستھرے شہر اندور کو جوڑنے کے لیے شروع ہوئی ہے۔اب اندور کے لوگ ایک ہی دن میں آسانی سے مہاکال کا دورہ کر سکیں گے۔اُجین اور روٹ کے لوگوں کو اندور میں اپ ڈاو ¿ن میں آسانی ہوگی۔ یہاں اندور میں بھی عوامی نمائندوں نے ٹرین کو ہری جھنڈی دکھائی۔ایم پی لالوانی نے کہا کہ لوگوں کی طرف سے اس ٹرین کی کافی دنوں سے مانگ تھی۔ یہ تحفہ تائی کی کوششوں سے آیا ہے۔انہوں نے کہا کہ اندور ریلوے اسٹیشن کو جدید بنایا جائے گا۔ آنے والے وقت میں جو بجٹ آئے گا۔ اس میں اس سلسلے میں ہر ممکن کوشش کی جائے گی۔لوک سبھا کی سابق اسپیکر سمترا مہاجن نے کہا کہ اس کے لیے بہت کوششیں کی گئیں۔ کئی سیاستدانوں اور عہدیداروں سے بات چیت ہوئی۔ریلوے ٹریک بھی کافی وقت سے تیار تھا۔ٹرین شروع ہونے کا انتظار کر رہے تھے۔لیکن وزیراعظم اس چھوٹے سے کام کے لیے آئے ہیں، یہ بھی قسمت کی بات ہے۔ انہوں نے بھوپال میں تیار کیے گئے نئے اسٹیشن کی بھی تعریف کی۔انہوں نے کہا کہ بھوپال اسٹیشن بہت جدید اور اچھی طرح سے بنایا گیا ہے۔