صفائی اور عوامی تحفظ کو یقینی بنائیں اسکول اور اسپتال:انشل گپتا


اُجین15نومبر(نیا نظریہ بیورو)میونسپل کمشنر نے اسکول منتظمین اور اسپتال منتظمین کے ساتھ ایک اہم میٹنگ میں صفائی اور عوامی تحفظ کے بارے میں تفصیل سے تبادلہ خیال کیا۔میلے کے دفتر میں منعقدہ اس میٹنگ میں سب سے پہلے ان کی طرف سے کی جانے والی سرگرمیوں کے بارے میںا سکول اور اسپتال منتظمین سے معلومات حاصل کی گئیں۔اس کے ساتھ صفائی اور صحت عامہ کے حوالے سے ان کی جانب سے اٹھائے جانے والے اقدامات پر تبادلہ خیال کیا گیا۔اسکولوں اور اسپتالوں میں سوچھ بھارت مشن کے تحت، مقررہ اصولوں کے مطابق شرائط پر عمل کرتے ہوئے صد فیصد تعمیل کو یقینی بنانے کے لیے کہا گیا تھا۔ہدایت دی گئی کہ اسکولوں اور اسپتالوں میں ویسٹ مینجمنٹ اور ٹھکانے لگانے کے حوالے سے مقررہ ہدایات کے مطابق کارروائی کی جائے۔جیسے کہ گیلے اور خشک کچرے کی علیحدگی، مخصوص کوڑے دان کا استعمال، کمپوسٹنگ کے انتظامات اور زیرو ویسٹ انسٹی ٹیوٹ کی کوششیں بالکل ضروری ہیں۔اسکولوں اور اسپتالوں میں واقع سہولت والے گھر،بیت الخلاء، پیشاب خانوں وغیرہ کی صفائی ستھرائی پر بھی خصوصی توجہ دی جائے۔اسکول اور اسپتال کے احاطے کی مسلسل صفائی کو یقینی بنایا جائے۔ممنوعہ پولی تھین اور پلاسٹک کا استعمال نہ کرتے ہوئے دیگر مواد کے استعمال کو یقینی بنایا جائے جو نقصان دہ نہ ہو۔ہمارے اداروں سے گندے پانی کی نکاسی کو منظم کیا جائے۔انسٹی ٹیوٹ کے احاطے میں منظم کمپوسٹنگ کا عمل شروع کریں تاکہ پیدا ہونے والے فضلے کو منظم طریقے سے ٹھکانے لگایا جا سکے۔زیرو ویسٹ اسکول اور زیرو ویسٹ اسپتال کے لیے کوششیں کی جائیں۔ اس سمت میں ترغیب کے طور پر میونسپل کارپوریشن مختلف مقابلوں کا انعقاد کر رہی ہے، جس کے تحت زیرو ویسٹ اسکول اور اسپتال کو بھی اعزاز سے نوازا جائے گا۔صفائی ستھرائی، وال پینٹنگ وغیرہ کے مقابلے بھی منعقد کئے جا رہے ہیں۔ اسکول اور اسپتال انتظامیہ کو چاہیے کہ وہ اپنے احاطے کی بیرونی دیواروں کو پینٹ کریں اور اس میں صفائی سے متعلق نعرے لکھیں۔ان پینٹنگز میں اسکول کے بچوں کو بھی استعمال کیا جانا چاہیے اور انھیں بہتر کارکردگی کے لیے تحریک دینا چاہیے۔میٹنگ میں کمشنر نے واضح طور پر کہا کہ پبلک سیفٹی کے نقطہ نظر سے اسکولوں اور اسپتالوں کے لیے فائر این او سی حاصل کرنا لازمی ہے۔ایسے ادارے جن کی عمارتیں 9 میٹر اونچی ہیں اور کم از کم 500 مربع میٹر میں تعمیر کی گئی ہیں، وہ فوری طور پر فائر این او سی کا عمل مکمل کریں۔کمشنر نے تمام منتظمین سے کہا کہ ان کے ادارے سے متعلق ہر فرد چاہے اس کا تعلق اس کے عملے سے ہو،طالب علم ہو یا کوئی اورہو اس بات کو یقینی بنائیں کہ ہر وہ شخص جو ان کے ادارے میں آتا ہے یا اس سے رابطہ کرتا ہے اسے لازمی طور پر ٹیکہ لگاہو۔دونوں خوراکیں 100 فیصد حاصل کرنے کے بعد اس کا سرٹیفکیٹ اپنے ادارے میں چسپاں کریں۔
محکمہ صحت کے عملہ کو ہدایت دی گئی کہ وہ اپنے اپنے علاقوں میں واقع اسکولوں اور اسپتالوں کا باقاعدگی سے معائنہ کریں، صفائی ستھرائی کی صورتحال کا جائزہ لیں اور ویکسینیشن کے بارے میں معلومات حاصل کریں۔میٹنگ میں مختلف اسکولوں اور اسپتالوں کے ڈائریکٹرز اور میڈیکل ایسوسی ایشنز کے نمائندوں نے شرکت کی۔