مرحومہ رابعہ بی کے کنبہ کے تین لو گوں کی رپورٹ آئی منفی


اسپتال سے ہو ئے ڈسچارج
کلکٹر نے گلدستہ دے کر 14 دنوں تک گھر پر رہنے کا دیا مشورہ
اُجین11 اپریل(نیا نظریہ بیورو)ہفتہ کے روز ، شہر کے پہلے کورونا متاثرہ علاقے جانسا پورہ سے ایک مثبت خبر آئی۔ کورونا کی وجہ سے صوبہ میں پہلی مو ت جا نساپورہ ساکن 65 سالہ خاتون رابعہ بی کی ہوئی تھی۔ جانچ میں مر حومہ کے شوہر سمیت چھ افراد متاثرہ پائے گئے۔ وہ سب اسپتال میں زیر علاج تھے۔ ہفتے کے روز ، متوفی کے لواحقین کے تین افراد کی کورونا رپورٹ منفی آئی۔ اس کے بعد ان لوگوں کو اسپتال سے گھر جانے کی اجازت دے دی گئی ۔ کلکٹر نے صحتمند مریضوں کو گلدستہ پیش کر گھر کیلئے روانہ کیا ۔اُجین میں 65 سالہ خاتون کی موت کے بعد ، مثبت مریضوں کے ساتھ مرنے والوں کی تعداد میں اضافہ ہورہا ہے۔ اب تک ضلع میں 16 مثبت مریض سامنے آچکے ہیں ، جبکہ 5 کی موت ہو چکی ہے۔ یہ تمام افراد آر ڈی گارڈی میڈیکل کالج میں زیر
علاج تھے۔ صحت یاب ہونے والے مریضوں کی خیریت معلوم کرنے کیلئے کلکٹر جناب ششانک مشرا خود اسپتال پہنچے ۔ انہوں نے یہاںصحت یاب ہوئے جانساپورہ ساکن 30سالہ نظام انصاری ولد مہرالدین ، 23 سالہ گلریز ولد کمال الدین انصاری اور 17 سالہ ا لشفاءولد کمال الدین انصاری کو گلدستہ پیش کر اسپتال سے وداع کیا۔ اسپتال سے ڈسچارج ہو ئے مریضوں نے کہا کہ کورونا انفیکشن سے خوفزدہ نہیں ہونا چاہئے ، ہم یقینی طور پر ڈاکٹروں کے احتیاط اور علاج کے باعث کامیاب ہوئے۔ ڈسچارج ہونے کے بعد ، ان تینوں نے بتایا کہ جب انہیں اسپتال سے فارغ کیا گیا تو انہیں بہت اچھا محسوس ہو رہا ہے اور ہم ضلع انتظامیہ ، پولیس انتظامیہ کے ساتھ ساتھ ڈاکٹروں کی سخت محنت سے صحت یاب ہوگئے ہیں تمام لوگ شکریہ کے حق دار ہیں۔ ضلع اُجین میں پہلی کامیابی ڈاکٹروں اور ضلع انتظامیہ اور دیگر کی مدد سے حاصل کی گئی ہے۔
کلکٹر جناب ششانک مشرا نے تینوں مریضوں کو صحت یاب ہونے پر مبارکباد دی اور کہا کہ انہیں کچھ دن تک کنبہ سے دور رہنا چاہئے ، کم از کم لوگوں سے رابطہ کریں۔ ڈسچارج سے قبل ڈاکٹر کے ذریعہ تین افراد کے لواحقین کو عمومی ہدایات دیتے ہوئے بتایا کہ خاص طور پر بزرگوںو بچوں سے نہ ملیں تو بہتر ہے ، گھر میں ماسک کااستعمال کریں ، کہیں بھی سفر نہ کریں ، اپنے ہاتھوں کو اچھی طرح سے صابن سے دھو ئیں یا اسے سینیٹائز کریں، گرم پانی میں ڈٹرجنٹ ڈال کر کپڑوں کو دھوکر دھوپ کی روشنی میں چار سے پانچ گھنٹے تک روزانہ پہنے ہوئے کپڑے سکھائیں۔ اپنے کھانے کے برتن الگ رکھیں اور استعمال کے بعد انہیں گرم پانی سے بھی دھو لیں۔ متناسب لیکن آسانی سے ہضم شدہ کھانا استعمال کریں ، وافر مقدار میں پانی پائیں ، نشہ آور سگریٹ نوشی کا استعمال نہ کریں ، رات کو آرام کریں اور وقت پر سوئیں ، خوش رہنے کی کوشش کریں ،ڈاکٹروں کے ذریعہ دی گئی دوائیں بروقت لیں۔ کورونا وائرس پر جیت حاصل کی جا سکتی ہے لہٰذا دوسروں کی رہنمائی کریں اور معاشرے میں اس وبا کی گھبراہٹ کو کم کرنے میں نمایاں کردار ادا کریں ۔ دوستوں اور رشتے داروں کو گھبرانے اور احتیاط برتنے کی ترغیب دیں۔ اگر صحت کا کوئی نیا مسئلہ پیش آتا ہے تو ، فوری طور پر اور کسی بھی دیگر پریشانیوں کے لئے طبی مشورے حاصل کریں ۔ آپ کورونا کنٹرول روم کے ٹیلیفون نمبر 07612637501 اور 2637515 پر رابطہ کرسکتے ہیں۔
آر ڈی گارڈی میڈیکل کالج کے ڈاکٹر ، ڈاکٹر آشیش سنگھ نے بتایا کہ وہ بھرتی مریضوں کی مسلسل نگرانی کر رہے تھے اور صبح ، دو پہر اور شام تین شفٹوں میں ڈاکٹر اور عملہ کی ڈیوٹی لگائی گئی تھی۔ ڈاکٹر آشیش سنگھ نے بتایا کہ تینوں مریضوں کو 31 مارچ کو داخل کیا گیا تھا اور ان کے نمونوں کی تین دفع جانچ کی گئی تھی ۔ تفتیش کے بعد ، ان کی رپورٹ کو آج 11 اپریل بروز ہفتہ دو پہر میں ڈسچارج کردیا گیا ہے اور انہیں احتیاط برتنے کی ہدایت دی گئی ہے۔ آر ڈی گارڈی میڈیکل کالج میں اس وقت تین مشتبہ مریض ہیں ، جن کی رپورٹ ابھی آنی باقی ہے اور پانچ مریض جن کا علاج چل رہا ہے۔ ڈاکٹر آشیش سنگھ نے بتایا کہ آئیسولیشن وارڈ سے ڈسچارج ہونے کے بعد ، مذکورہ بالا تینوں افراد کے ذریعہ اعلامیہ / وعدہ دہندگی پر دستخط کرائے گئے ہیں۔ ڈسچارج کے موقع پر ، آر ڈی گارڈی میڈیکل کالج کے عملہ جن میں نوڈل آفیسر ڈاکٹر آلوک سونی ، ڈسٹرکٹ اسپتال کے ڈاکٹر کے سی پرمار وغیرہ موجود رہے۔