اُجین کو جلد ہی ملےں گے دو بڑے تحفے :


15 نومبر کے بعد اُجین سے اندور اور چتور گڑھ تک میمو ٹرین چلنا متوقع
اُجین13نومبر(نیا نظریہ بیورو)کورونا بحران ختم ہونے کے بعد ریلوے کی سرگرمیاں تیز ہوگئی ہیں۔ ریلوے کا سفر کرنے والوں کا وقت پٹری پر آنے لگا ہے۔15 نومبر کے بعد اُجین کو ریلوے کے دو بڑے تحفے مل سکتے ہیں۔اس میں سب سے بڑا اندور کے لیے دو میمو ٹرینیں چلنا ہے۔جبکہ چتوڑ گڑھ کے لیے بھی اُجین سے میمو ٹرین چل سکتی ہے۔رتلام ریلوے ڈوےژن کے پاس اس کے لیے دو ریک دستیاب ہیں۔ تاہم دونوں ٹرینیں کس دن سے ٹریک پر چلیں گی، اس کا شیڈول سرکاری طور پر جاری نہیں کیا گیا ہے۔
درحقیقت15 نومبر کو وزیر اعظم نریندر مودی اُجین-فتح آباد-اندور کے درمیان میمو ٹرین کا ورچوئل افتتاح کریں گے۔ اس کے ساتھ 26 نومبر کو مغربی ریلوے کے جنرل منیجر آلوک کنسل رتلام ریلوے ڈوےژن کے چتور گڑھ-رتلام سیکشن کا معائنہ کریں گے۔ ڈی آر ایم ونیت گپتا کا کہنا ہے کہ بورڈ کی جانب سے میمو کو چلانے کی تمام تیاریاں مکمل کر لی گئی ہیں۔ کچھ تکنیکی خامیاں ہیں، ان کو دور کیا جا رہا ہے۔ ہماری کوشش ہے کہ ویسٹرن ریلوے کے جی ایم کے معائنہ سے قبل مسافروں کو اس ٹرین کی سہولت مل جائے۔ ویسٹرن ریلوے نے ابھی تک اپنے شیڈول کو حتمی شکل نہیں دی ہے۔
اُجین-فتح آباد- اندور کے درمیان چلنے والی میمو ٹرین دن میں دو سفر کرے گی۔ اس وقت دیواس کے راستے اندور-اُجین کا فاصلہ 80 کلومیٹر ہے، اس میں 1.30 سے 2 گھنٹے لگتے ہیں۔ لیکن یہ فاصلہ فتح آباد کے راستے سے کم ہو کر 17 کلومیٹر رہ جائے گا۔ اس سے دونوں شہروں کے درمیان کا سفر 1.15 گھنٹے میں طے ہو جائے گا۔فتح آباد جانے والی ٹرین دونوں شہروں کے درمیان چنتامن گنیش، لیکوڈا، فتح آباد، بلودہ تکون، اجنود، پالیا، لکشمی بائی نگر اسٹیشنوں پر رکے گی۔اُجین سے صبح 6.25 بجے روانہ ہو کر صبح 7.40 بجے اندور پہنچے گی اور ایک اور ٹرین 4.25 بجے اُجین سے روانہ ہو کر شام 5.40 بجے اندور پہنچے گی۔اندور سے صبح 8 بجے روانہ ہوں گے اور صبح 9.25 بجے اُجین پہنچیں گے۔ ایک اور ٹرین اندور سے صبح 11.10 بجے روانہ ہوگی اور 12.25 بجے اُجین پہنچے گی۔اندور-وارانسی کو اس ٹریک پر لایا جائے گا۔اندور تا اُجین بذریعہ مہو-اندور- پریاگ راج ایکسپریس اور مہاکال ایکسپریس (اندور- وارانسی) ٹرین اندور سے فتح آباد-اُجین روٹ پر چلائی جائے گی۔ پریاگ راج ٹرین چل رہی ہے لیکن مہاکال ایکسپریس ٹرین کورونا کے بعد سے بند ہے۔