بھوپال میںبینڈ باجے سے ہوگا مہمانوں کا استقبال :


وزیر اعظم کے پروگرام میں آنے والے 27ہزار لوگ کریں گے گیسٹ ہاﺅس میں آرام
بھوپال13نومبر(نیا نظریہ بیورو)بھوپال کے جمبوری میدان میں 15 نومبر کو ہونے والے قبائلی مہا سمیلن میں مہمانوں کے کھانے پینے کا خاص خیال رکھا گیا ہے۔ اس بار پروگرام میں خصوصی طور پر آنے والے ان مہمانوں کو دال اور چاول کے ساتھ پوری سبزی بھی دی جائے گی۔ اب تک ایسے پروگراموں میں آنے والے مہمانوں کو پوری سبزیوں کے پیکٹ دئیے جاتے تھے۔
یہ پیکٹ پنڈال میں ہی تقسیم کیے گئے۔ پچھلے کچھ پروگراموں میں سب کو کھانا نہ ملنے کی شکایات سامنے آئی تھیں۔ اس وجہ سے اس بار یہ مہمان جہاں بھی ٹھہریں گے، کلکٹر کی ہدایت پر بڑے ادارے کھانے کا انتظام کریں گے۔ بھوپال میں تقریباً 27 ہزار لوگوں کی رہائش کا انتظام کیا گیا ہے۔ ان کے استقبال کے لیے تقریباً 500 اہلکار تعینات کیے گئے ہیں۔
مہمانوں کے لیے خصوصی انتظامات کیے گئے ہیں۔ ان کے آرام کے لیے شہر کے سرکاری اسکولوں کے ساتھ نجی اسکولوں، کالجوں کے گیسٹ ہاو ¿سز میں بھی انتظامات کیے گئے ہیں۔ یہاں آرام کرنے سے لے کر کھانے تک کی سہولیات فراہم کی جائیں گی۔ شہر کے 21 ادارے انہیں کھلانے کے لیے آگے آئے ہیں۔ انہوں نے 27 ہزار قبائلیوں کی مہمان نوازی کی ذمہ داری لی ہے۔
مہمانوں کے لیے چائے سے لے کر کھانے تک کا خصوصی انتظام کیا جائے گا۔ محکمہ قبائلی ترقی کے حکام نے بتایا کہ 25 مقامات پر قیام کے انتظامات کیے گئے ہیں۔ بھوپال میں عمریہ، نرسنگھ پور، بالاگھاٹ، ڈنڈوری، منڈلا، جھابوا، نیمچ، سیونی، کٹنی، کھرگون، علی راج پور سے آنے والے قبائلی مہمانوں کو روکا جائے گا۔ ان مہمانوں کو 14 تاریخ کو ان کی آمد پر چائے، پانی اور ناشتہ دیا جائے گا۔ اس کے بعد شام کو دال چاول پوڑی سبزی دی جائے گی۔
پٹرول پمپ ایسوسی ایشن کے صدر اجے سنگھ نے کہا کہ ہم اپنی مرضی سے مہمانوں کے استقبال کے انتظامات کریں گے۔ شہر کی تمام بڑی انجمنوں کی ذمہ داری ہے کہ وہ ایک ایک ہزار افراد کا استقبال کریں۔ یہ رات 8 بجے بھوپال پہنچے گی۔ سب سے پہلے ان کا استقبال بینڈ باجا اور تلک کے ساتھ کیا جائے گا۔ اس کے بعد چائے، ناشتے اور کھانے کا انتظام کیا جائے گا۔ اسی طرح دیگر انجمنیں بھی ایک ایک ہزار افراد کا استقبال کریں گی۔