فصلوں کو پانی دینے کےلئے بے وقت دی جارہی بجلی،کسانوں نے کیا مظاہرہ:


رات 2.45 سے صبح 6.45 بجے تک اور دو پہر 3 سے9 تک دی جارہی بجلی، عہدیداروں کو کیا تالے میں بند
اُجین12نومبر(نیا نظریہ بیورو)کسانوں کو گندم، چنا، آلو، پیاز اور لہسن کی فصلوں کو پانی دینے کے لیے بجلی نہیں مل رہی۔ اس کے ساتھ ہی ویسٹ زون الیکٹرسٹی ڈسٹری بیوشن کمپنی نے بجلی کے اوقات میں تبدیلی بھی کی ہے۔ اس سے پریشان کسانوں نے ریاست بھر میں بجلی کی تقسیم کے 280 مراکز پر مظاہرہ کیا۔ اُجین کے قریب گاو ¿ں جہانگیر پور میں کسانوں نے بجلی کے اہلکاروں کو تالے میں بند کر کے مظاہرہ کیا۔ تاہم کچھ ہی دیر میں چینل گیٹ کا تالا کھول بھی دیا گیا۔
بھارتیہ کسان سنگھ کی طرف سے بلائی گئی اس مہم میں تحصیل سطح پر کسانوں نے بجلی کمپنی کے خلاف مظاہرہ کیا۔ مالوا صوبے کی انڈین فارمرز ایسوسی ایشن کے بھرت سنگھ بیس نے بتایا کہ پاور کمپنی کسانوں کو روبوٹ سمجھ رہی ہے۔ بجلی کے نئے شیڈول میں رات 2.45 سے صبح 6.45 بجے تک اور دو پہر 3 بجے سے رات 9 بجے تک فصلوں کو پانی دینے کے لیے بجلی دی جارہی ہے۔
رات 2 بجے اٹھ کر کھیت میں جانا کسانوں کے لیے سب سے بڑا مسئلہ ہے۔ بھرت سنگھ نے کہا کہ بجلی بورڈ کی جانب سے انہیں بتائے بغیر من مانے طریقے سے ٹرانسفارمر تبدیل کیے جاتے ہیں۔ اس موقع پر بیس نے بجلی کمپنی کو آٹھ نکاتی مطالبات پر مشتمل ایک میمورنڈم بھی پیش کیا۔ بیس نے کہا کہ اگر بجلی کمپنی نے اپنی پالیسیوں میں تبدیلی نہیں کی تو پوری ریاست کے کسان پرتشدد تحریک شروع کرنے پر مجبور ہوں گے۔
ڈوےژنل ایگزیکٹو انجینئر، ایم پی ویسٹ زون الیکٹرسٹی ڈسٹری بیوشن کمپنی اروند سنگھ نے کہا کہ کچھ کسانوں کو کاشتکاری کے بدلے ہوئے شیڈول کی وجہ سے مسائل کا سامنا کرناپڑا ہے۔عہدیداروں سے بات کرنے کے بعد ہم اس پر نظر ثانی کریں گے۔