اُجین میں کیا گیا جمہوریت کے جنگجوﺅں کا اعزاز:


مجاہدین کے خاندانوں نے جو دُکھ اُٹھایا ہے اسے بیان نہیں کیا جاسکتا:جگدیش دیوڑا
اُجین11نومبر(نیا نظریہ بیورو)آج اُجین میں کالی داس اکیڈمی میں واقع پنڈت سوریہ نارائن ویاس سنکول میںضلع کے جمہوریت پسندوں کو اعزاز سے نوازا گیا اور انہیں تانبے کی تختیاں پیش کی گئیں۔پروگرام کو مہمان خصوصی کے طور پر خطاب کرتے ہوئے اُجین ضلع کے انچارج اور مالیات، تجارتی ٹیکس، اقتصادی اور شماریات کے وزیر جگدیش دیوڑا نے کہا کہ جمہوریت جنگجوو ¿ں کے خاندانوں کو جو مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے اسے بیان نہیں کیا جا سکتا۔ 1975 میں ان کے ساتھ جو کچھ ہوا وہ زیادتیوں کی انتہا تھی۔وزیر دیوڑا نے کہا کہ تمام تر جبر کے باوجود جمہوریت کے جنگجو پیچھے نہیں ہٹے، ثابت قدم رہے اور لالچ میں نہیں آئے۔انہوں نے کہا کہ ایمرجنسی کی صورتحال عوام کو بتانی چاہئے۔حکومت ہمیشہ جمہوریت کے علمبرداروں کے ساتھ کھڑی رہے گی۔کسی کو تکلیف نہیں ہونے دی جائے گی۔
اس سے قبل تقریب کا آغاز مہمانوں کے ہاتھوں سرسوتی کی تصویر پر چراغاں کرکے کیا گیا۔ایم پی کا ترانہ کلا پتھک دَل نے پیش کیا۔ایوارڈ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعلیٰ تعلیم ڈاکٹر موہن یادو نے کہا کہ جمہوریت کے جنگجوو ¿ں کو آج اعزاز سے نوازا جا رہا ہے۔وہ تاریخ میں ہمیشہ کے لیے امر رہے گا، اس لیے انہیں تانبے کا تختہ دیا گیا ہے۔ڈاکٹر یادو نے کہا کہ آج کا دن بہت اہم ہے۔جمہوریت کے تحفظ کے لیے دی گئی قربانیوں کو یاد کرتے ہوئے فوجیوں کو خراج عقیدت پیش کرنے کا کام ریاستی حکومت نے کیا ہے۔ممبر اسمبلی انل فیروزیا نے کہا کہ جمہوریت کے جنگجوو ¿ں کا احترام کرتے ہوئے ہمیں فخر ہو رہا ہے۔1975 میں جنگجوو ¿ں نے 19 ماہ جیل میں رہ کر تکلیفیں برداشت کیں۔اس دوران اُن کے اہل خانہ نے جو مشکلات برداشت کیں وہ واقعی قابل تعریف ہیں۔فیروزیا نے اپنے والد سابق ایم ایل اے بھورے لال فیروزیا کو یاد کرتے ہوئے کہا کہ جب وہ چھوٹے تھے تو ان کے والد کو بغیر کسی وجہ کے جیل میں ڈال دیا گیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ ان کے خاندان میں کسی سمجھوتے کے بغیر جمہوریت کے دفاع میں اپنی جان قربان کردی۔مزید کہا کہ ان کے خاندان کی طرح ریاست بھر میں سینکڑوں خاندان ایسے ہیں، جن کے دکھوں کو برداشت کرنے کی وجہ سے ہی جمہوریت کو بچایا جاسکا ہے۔ایم ایل اے پارس جین نے کہا کہ حکومت نے جمہوریت کے جنگجوو ¿ں کا احترام کرکے اپنا فرض پورا کیا ہے۔یہ اعزاز ایسے لوگوں کا ہے، جنہوں نے 19 ماہ جیل میں رہنے کے بعد جمہوریت کے لیے جدوجہد کی۔جین نے کہا کہ جو جنگجو اس دنیا میں نہیں ہیں انہیں بھی احترام کے ساتھ خراج عقیدت پیش کیا جانا چاہئے۔پروگرام میں میونسپل کارپوریشن کے سابق چیئرمین پرکاش چتوڑا نے اپنی کتاب ‘وہ سیاہ دن’ تقسیم کی۔
اس پروگرام میں کلکٹر آشیش سنگھ، وویک جوشی،جگدیش اگروال،انل جین کالوہیڑا، شری رام سانکھلا موجود تھے۔ پروگرام کی نظامت پدمجا رگھوونشی نے کی۔ضلع کے انچارج وزیر جگدیش دیوڑا، ایم پی انیل فیروزیا،ایم ایل اے شری پارس جین،وویک جوشی نے اسٹیج سے ضلع کے تمام جمہوریت پسندوں کو شال، شریفل پیش کر انہیںتمغہ ا پیش کیا۔جن جنگجوو ¿ں کو تانبے کی تختیاں پیش کی گئیں ان میں جگدیش اگروال، نریندر سانکھلا، جاوتری دیوی فیروزیا،اوم پرکاش پاٹھک، آدتیہ راو ¿ وِیاس،عبدالمجید، عبدالالیاس، کشال راو ¿ گروڈ، مانگی لال ایروار،چتربھوج مینا، ہیرالال گپتا، انیل کمار ویاس، وریندر کاواڈیا، اشوک کوٹوانی، روپ پمنانی،بھوپیندر دلال، گنیش کیلکر، راجندر شندے، نریندر بھاٹی،رام بھاولکر اور دیگر نامور جنگجو شامل تھے۔