لاک ڈاون کی وجہ سے مزدوروں کوفاقہ کشی کاسامنا


بھوپال:9اپریل(نیانظریہ بیورو)
لاک ڈاو¿ن کے بعد ریاستی حکومت نے اعلان کیاتھا کہ غریب خاندانوں کو مفت راشن دیا جائے گا۔ چاہے کسی کے پاس راشن کارڈ ہو یا نہیں ہو۔ اس کے علاوہ دوسرے اضلاع سے آنے والے مزدوروں کو بھی اجرت کے ساتھ راشن فراہم کیا جائے گا۔ لیکن راجدھانی میں بہت سے ایسے علاقے ہیں جہاں مزدوروں کو راشن نہیں مل رہا ہے۔ ان کا الزام ہے کہ حکومت نے اس کے کھاتے میں صرف 500 روپے جمع کرائے ہیں۔ اب اس کے سامنے معاش کا سخت بحران ہے۔مزدوروں کا کہنا ہے کہ انہیں راشن نہیں مل رہا ہے۔ کھانا ایک وقت کے لئے دستیاب نہیں ہے۔ اس کے پاس دوسری کوئی جگہ بھی نہیں ہے۔ جس کی وجہ سے بہت ساری پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ایک اعداد و شمار کے مطابق راجدھانی میںایسے بہت سے مزدور ہیں ، جن کے پاس راشن کارڈ نہیں ہیں۔ تاہم ، ان کے کھانے کا انتظام کرنے کی ذمہ داری میونسپل کارپوریشن اور محکمہ فوڈ کو سونپ دی گئی ہے۔ میونسپل کارپوریشن نے شہر کے 85 وارڈوں کے لئے 85 گاڑیوں کے ذریعہ کھاناپہنچانے کاانتظام کررہی ہے، جنہیںضرورت مندوں تک کھانا تقسیم کرنے کا کام سونپا گیا ہے۔واضح رہے کہ لاک ڈاو¿ن کے بعد مزدوروں کے سامنے معاش کا بحران پیدا ہوگیا ہے۔ وہیں مزدوروں کا الزام ہے کہ انہیں نہ تو راشن مل رہا ہے اور نہ ہی حکومت کی جانب سے کوئی مدد۔