کملناتھ کے بیان پر وزیر اعلیٰ کا پلٹوار:


ضمنی انتخاب میں ہار کو ہضم نہیں کر پا رہے کمل ناتھ:شیوراج سنگھ چوہان
بھوپال11نومبر(نیا نظریہ بیورو)وزیر اعلیٰ شیوراج سنگھ چوہان نے کانگریس کے ریاستی صدر اور سابق وزیر اعلیٰ کمل ناتھ کے الیکشن لوٹنے والے بیان پر جوابی حملہ کیا ہے۔ شیوراج نے کہا کہ کمل ناتھ ضمنی انتخاب میں ہار کو ہضم نہیں کر پا رہے ہیں۔ وہ کانگریس کی کم ہوتی حمایت سے بوکھلا گئے ہیں۔ یہ عوام اور جمہوریت کی توہین ہے۔وزیر اعلیٰ نے مزید کہا کہ آخر عوام نے بی جے پی کو ووٹ دیا ہے۔ کیا کمل ناتھ کو پرتھوی پور اور جوبٹ کے لوگوں کی تذلیل کرنے کا حق ہے؟ جمہوریت کا مذاق اڑا رہے ہیں۔ کیا لوگ الیکشن پر ڈاکہ ڈالتے ہیں؟ میں کمل ناتھ کے اس بیان کی سخت مذمت کرتا ہوں۔ سیاست میں جیت ہار ہوتی ہے۔
کمل ناتھ نے بدھ کو ایم پی میں اسمبلی اور لوک سبھا سیٹوں کے ضمنی انتخابات کے نتائج کو لے کر بی جے پی پر بڑا الزام لگایا تھا۔ رےگاو ¿ں میٹنگ میں خطاب کرتے ہوئے کہا تھا کہ پچھلے 5 مہینوں میں کئی ضمنی انتخابات ہوئے، لیکن جوبٹ، پرتھوی پور کی کہانی مختلف ہے۔ وہاں الیکشن جیتا نہیں لوٹا گیا ہے۔ ہم نے رےگاو ¿ں میں 313 میں سے 200 بوتھ جیت لیے ہیں۔
کمل ناتھ نے کہا کہ رائےگاو ¿ں کو بی جے پی کا گڑھ کہا جاتا تھا، لیکن لوگوں نے ثابت کر دیا کہ رائےگاو ¿ں کے لوگ سیدھے، بیوقوف اور فروخت کے لیے نہیں ہیں۔ بی جے پی انہیں خرید نہیں سکتی۔ شیوراج سنگھ انتخابی نتائج کے بعد اعلانات کر رہے ہیں، لیکن پرانے اعلانات کا کیا ہوگا؟ وہ جھوٹے اعلانات میں مہارت رکھتے ہیں۔
شیوراج نے کہا کہ کانگریس اور کچھ دوسرے لوگوں کو ایک اور مسئلہ درپیش ہے کہ بھارتیہ جنتا پارٹی قبائلی فخر کا دن کیوں منا رہی ہے؟ میں وزیر اعظم نریندر مودی کا شکریہ ادا کرنا چاہتا ہوں، کیونکہ انہوں نے آزادی کے جنگجو برسا منڈا، تانتیا ماما، رگھوناتھ شاہ- شنکر شاہ، بھیمانائک اور کھجیا نائک کے تعاون کے لیے ملک بھر میں یوم قبائلی منانے کا اعلان کیا ہے۔
انہوں نے کہا کہ 15 سے 22 نومبر تک یوم قبائلی فخر نہ صرف قبائلی عظیم ہیروز کو خراج عقیدت پیش کیا جائے گا۔ بلکہ یہ قبائلی برادری کی معاشی، سماجی اور تعلیمی بااختیار بنانے کے لیے سنگ میل ثابت ہوگا۔ لیکن کانگریسیوں کے پیٹ میں درد ہے کہ اس برادری کو بھوپال کیوں کہا جا رہا ہے؟ حکومت اس پر کیوں خرچ کر رہی ہے؟