ترنگے کی طرح روشن کیا گیا حبیب گنج ریلوے اسٹیشن،افتتاح کےلئے تیار


بھوپال10نومبر(نیا نظریہ بیورو)عالمی معیار کے حبیب گنج ریلوے اسٹیشن کی عمارت کو ترنگوں کی طرح روشن کیا گیا ہے۔ جس کی خوبصورتی کو دیکھ کر کیا جا رہا ہے۔ اندر سے بھی یہی منظر ہے۔ وزیر اعظم نریندر مودی 15 نومبر کو نئے تعمیر شدہ ریلوے اسٹیشن کا افتتاح کریں گے۔ اسٹیشن کو ایئرپورٹ جیسی سہولیات کے ساتھ دوبارہ ترقی کے بعد تیار کیا گیا ہے۔وہیں 1100 مسافروں کے بیٹھنے کے ساتھ مختلف سہولیات پر تقریباً 100 کروڑ روپے خرچ ہوئے ہیں۔ اسپتال اور شاپنگ کمپلیکس جیسی سہولیات اسٹیشن کے باہر تقریباً 300 کروڑ روپے کی سرمایہ کاری سے تیار کی گئی ہیں۔ اسے بنسل پاتھ ویز پرائیویٹ کمپنی نے تیار کیا ہے۔
بھوپال کا حبیب گنج ریلوے اسٹیشن دوبارہ ترقی کے بعد ہوائی اڈے جیسی سہولیات کے ساتھ تیار ہو گیا ہے۔ ایک وقت میں 1100 مسافروں کے بیٹھنے کے ساتھ مختلف سہولیات پر تقریباً 100 کروڑ روپے خرچ ہوئے ہیں۔ اسپتال اور شاپنگ کمپلیکس جیسی سہولیات اسٹیشن کے باہر تقریباً 300 کروڑ روپے کی سرمایہ کاری سے تیار کی جارہی ہیں۔ اسے بنسل پاتھ ویز پرائیویٹ کمپنی نے تیار کیا ہے۔
سٹیشن اور عوام کی سکیورٹی کو مدنظر رکھتے ہوئے مختلف مقامات پر کیمرے لگائے گئے ہیں۔ پورے اسٹیشن میں 162 ہائی ریزولوشن کیمرے نصب کیے گئے ہیں۔ کنٹرول روم میں بیٹھ کر پورے اسٹیشن کے اندر اور باہر کی نگرانی کی جا سکتی ہے۔ اس کے ذریعے بچوں اور خواتین مسافروں کی حفاظت کو مکمل طور پر مضبوط کیا جائے گا۔
اسٹیشن کی بہت سی جھلکیوں میں سے ایک اس کی روشنی ہے۔ اسٹیشن کو دن کے وقت قدرتی روشنی سے منور کیا جائے گا۔ رات کو موسم سے متاثر نہ ہونے والی لائٹس لگائی گئی ہیں۔ بارش اور تیز ہواو ¿ں سے یہ متاثر نہیں ہوگا۔ یہاں 700 مسافر بڑے ویٹنگ ایریا میں ایک ساتھ بیٹھ سکیں گے۔ ویٹنگ ایریا اور پلیٹ فارم میں 300 سمیت تقریباً 1100 لوگوں کے بیٹھنے کا انتظام ہے۔ 75-75 مسافروں کے بیٹھنے کی گنجائش والے دو ویٹنگ روم بنائے گئے ہیں۔
اسٹیشن کی دوبارہ ترقی کا کام جنوری 2017 میں شروع ہوا۔ اسے جولائی 2019 تک مکمل ہونا تھا لیکن وقت پر کام مکمل نہ ہونے کی وجہ سے اسے دسمبر 2019 میں منتقل کر دیا گیا۔ تاہم لاک ڈاو ¿ن کی وجہ سے اس میں ایک بار پھر تاخیر ہوئی۔ اب یہ مسافروں کے لیے مکمل طور پر تیار ہے۔