جوبٹ، پرتھوی پورمیں الیکشن جیتا نہیں لوٹا گیا ہے:کمل ناتھ


بھوپال10نومبر(نیا نظریہ بیورو)کمل ناتھ نے ایم پی میں اسمبلی اور لوک سبھا سیٹوں کے ضمنی انتخابات کے نتائج کو لے کر بی جے پی پر بڑا الزام لگایا ہے۔ رےگاو ¿ں پہنچے کمل ناتھ نے کہا کہ پچھلے 5 مہینوں میں کئی ضمنی انتخابات ہوئے، لیکن جوبٹ، پرتھوی پور کی کہانی الگ ہے۔ وہاں الیکشن جیتا نہیں لوٹا گیا ہے۔ ہم نے رےگاو ¿ں میں 313 میں سے 200 بوتھ جیت لیے ہیں۔
کمل ناتھ نے کہا کہ رےگاو ¿ں کو بی جے پی کا گڑھ کہا جاتا تھا، لیکن لوگوں نے ثابت کر دیا کہ رےگاو ¿ں کے لوگ سیدھے ہیں، بیوقوف اور بکاﺅ نہیں ہیں۔ بی جے پی انہیں خرید نہیں سکتی۔ شیوراج سنگھ انتخابی نتائج کے بعد اعلانات کر رہے ہیں، لیکن پرانے اعلانات کا کیا ہوگا؟ وہ جھوٹے اعلانات میں مہارت رکھتے ہیں۔
کمل ناتھ نے کہا کہ بھوپال میں اب 12 بچوں کی موت ہو گئی ہے۔ 150 بچے تھے، 40 معلوم ہیں، حکومت کا کہنا ہے کہ صرف 4 کی موت ہوئی۔ یہ دبانے چھپانے کی سیاست ہے۔ 2019 میں روزگار، کسان، نوجوانوں کی بات چھوڑ کر مودی نے قوم پرستی کی بات شروع کی۔ مہنگائی سے ہر کوئی پریشان ہے۔ کمر ڈھیلی نہ کرو، 2023 میں دوبارہ الیکشن ہونے والا ہے۔ آپ کو دوبارہ اسمبلی میں کانگریس کا جھنڈا لہرانا ہے۔
اپوزیشن کے سابق لیڈر اجئے سنگھ راہل نے کہا کہ یہ کلپنا سے بڑی رےگاو ¿ں علاقہ کے ہر ووٹر اور کارکن کی جیت ہے۔اس انتخاب نے ظاہر کر دیا ہے کہ اگر کانگریس لیڈر آج سے کمل ناتھ کی قیادت میں کام کرنا شروع کر دیں تو 2023 میں کانگریس جیت جائے گی۔ آج کسان، نوجوان، افسر خوش نہیں، صرف بی جے پی والے خوش ہیں۔ اب ان کی الٹی گنتی شروع ہو گئی ہے۔