زرعی تعلیم پر پابندی لگانے کےلئے ہائی کورٹ میں عرضی دائر:

وکرم و آرڈی یو یونیورسٹی میںبی ایس سی ایگریکلچر کو قواعد کےخلاف قرار دےکر دائر کی درخواست
اُجین09نومبر(نیا نظریہ بیورو)اُجین کی وکرم یونیورسٹی اور جبل پور کی رانی درگاوتی یونیورسٹی (آر ڈی یو) میں زراعت کی تعلیم پر پابندی لگانے کے لیے ہائی کورٹ میں مفاد عامہ کی عرضی دائر کی گئی ہے۔ درخواست گزار نے دعویٰ کیا ہے کہ دونوں یونیورسٹیوں نے زراعت کی تعلیم کے لیے انڈین کونسل آف ایگریکلچر سے اجازت نہیں لی ہے۔ اس کے ساتھ ساتھ طلباءکے لیے ضروری سہولیات جیسے لیب، عملہ، زرعی فارم وغیرہ دستیاب نہیں ہیں۔ ماضی میں اس معاملے میں گورنر سے شکایت بھی کی گئی تھی۔ اس کے بعد اب ہائی کورٹ میں مفاد عامہ کی عرضی دائر کی گئی ہے۔ اس پر آئندہ ہفتے سماعت ہونے کا امکان ہے۔
زرعی تعلیم پر پابندی کے حوالے سے ہائی کورٹ میں دائر درخواست کے معاملے میں وکرم یونیورسٹی کے وائس چانسلر پروفیسراکھلیش کمار پانڈے نے کہا کہ ہم نے زراعت کی تعلیم شروع کرنے سے پہلے پوری تیاری کی ہے۔اس سلسلے میں ہمیں حکومت سے اجازت مل گئی ہے۔ ہم آئی سی اے آر سے کوئی گرانٹ استعمال نہیں کر رہے ہیں۔ ہمیں وہاں سے کوئی گرانٹ نہیں مل رہی ہے۔ اور یہ کابینہ کا فیصلہ ہے۔ اگر یہ معاملہ عدالت میں ہے تو ہم وہاں جواب دیں گے۔ ہم طلبہ کے مستقبل کو اندھیرے میں نہیں ڈال سکتے۔
وکرم یونیورسٹی کی طرف سے شروع کیے گئے بی ایس سی ایگریکلچر کے لیے اس سال 180 سیٹیں مختص کی گئی ہیں۔ داخلہ کا عمل بھی مکمل ہو چکا ہے، اس کورس کی سالانہ فیس 57000 روپے مقرر کی گئی ہے۔
اس معاملے میں پہلے پروفیسر نج پانڈے نے گورنر کے سامنے عرضی داخل کی تھی۔ اس سلسلے میں راج بھون سے وکرم یونیورسٹی سے جواب طلب کیا گیا تھا۔ وائس چانسلر پروفیسر پانڈے نے کہا کہ جس سلسلے میں راج بھون سے جواب مانگا گیا ہے، ان معاملات میں ہمیں وہاں سے اجازت ملی ہے۔ اس لیے جواب نہیں دیا۔ اس کے بعد جبل پور کی رانی درگاوتی یونیورسٹی کے ٹیکنیکل اسٹاف ایسوسی ایشن کے سابق صدر ڈاکٹر پی جی نج پانڈے نے اسے ایم پی کے جبل پور ہائی کورٹ میں رکھا ہے۔ ایڈوکیٹ سریندر ورما درخواست کی نمائندگی کریں گے۔ درخواست میں الزام لگایا گیا ہے کہ دونوں یونیورسٹیوں کو یو جی سی گرانٹ مل رہی ہے۔ لیکن زراعت کی تعلیم کے لیے یو جی سی کے بنائے گئے قوانین پر عمل نہ کرنے کی وجہ سے گرانٹ کا غلط استعمال ہو رہا ہے۔
وکرم یونیورسٹی اور آر ڈی یو نے بھی زراعت کی تعلیم میں داخلے کے لیے ضروری پری ایگریکلچر ٹیسٹ نہیں لیا۔ طلباءکو براہ راست داخلہ دیا جا رہا ہے۔ جبکہ ریاستی زرعی یونیورسٹی میں داخلے کے لیے یہ امتحان پاس کرنا لازمی ہے۔ اس کی وجہ سے طلبہ میں بھی امتیازی سلوک ہورہا ہے۔ وکرم یونیورسٹی کے وائس چانسلر پروفیسر اکھلیش کمار پانڈے نے کہا کہ ہم اسے اگلے سال سے شروع کریں گے۔