’خستہ حال معیشت‘ کے سبب افغانستان کی امداد بحال نہیں ہوسکتی:عالمی بینک

نیویارک،9نومبر: عالمی بینک کے سربرای نے’ خستہ حال معیشت‘ کا پخ لگاکر افغانستان کی روکی گئی امداد بحال کرنے کا امکان رد کر دیا۔
عالمی بینک کے چیف ڈیوڈ ملپاس نے کہاکہ افغانستان کی تباہ حال معیشت میں کام کرنے کا تصور نہیں کرسکتے ۔
طالبان کو افغانستان کے9 ارب ڈالر کے ذخائر کی رسائی بھی روک دی گئی ہے۔
واضح رہے اس سے قبل عالمی بینک نےطالبان کے کنٹرول سنبھالنے کے بعد افغانستان کی امداد روک دی تھی جبکہ انٹر نیشنل مانٹری فنڈ(آئی ایم ایف) بھی افغانستان کی امداد معطل کرچکاہے۔
عالمی بینک کے افغانستان میں 2002 کے بعد سے5 اعشاریہ 3 ارب ڈالر کے کئی ترقیاتی منصوبے چل رہے تھے۔ بہرحال، عالمی بینک کے سربراہ نے ان پروجیکٹوں کے حوالہ سے کوئی بات نہیں کی۔