ملک میں موت اور ماتم کی دیوالی پہلی بار دیکھی:جیتوپٹواری


بھوپال:7اپریل(نیانظریہ بیورو)
وزیراعظم نریندر کے اعلان پر پورے ملک میں رات کے 9بجے 9منٹ کے لئے تمام لوگ لائٹ کو بند کر مومبتی ،ٹارچ ،دیئے اور فون کی فلیکس لائٹ جلانے کا اعلان کیا گیا تھا۔ جس کے بعدملک کے تمام باشندوں نے اس میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیا۔ مدھیہ پردیش میں بھی بروز اتوار دیوالی جیسا ماحول دیکھنے کو ملا۔ جہاں لوگوں نے نہ صرف اپنے گھر کی لائٹیں بجھائی بلکہ اپنے گھروں کو دیئے اور لائٹ سے جگمگادیا۔ جس کے بعد سابق وزیر اور راﺅ ایم ایل اے جیتو پٹواری نے بھی کورونا وائرس کے آنکڑوں کے ساتھ ٹویٹ کرتے ہوئے لکھا کہ موت اور ماتم کی دیوالی پہلی بار دکھی ہے۔ وہیں مدھیہ پردیش کانگریس نے بھی ٹویٹ کرتے ہوئے وزیراعظم مودی پر نشانہ سادھا ہے۔مدھیہ پردیش کانگریس نے اپنے ٹویٹ میں کہا کہ ہم نے خوشیوں میں خوب دیپ جلائیں ہیں ، لیکن مہاماری میں ہم دیوالی نہیں منا سکتے۔ وہیں اپنے دوسرے ٹویٹ میں مدھیہ پردیش کانگریس نے مودی پر طنز کستے ہوئے لکھا کہ اب وزیر اعظم کا اگلا ٹاسک کیا ہوگا©؟ جس کے ساتھ ہی مدھیہ پردیش کانگریس نے چار آپشن بھی دیئے ہیں۔ بالکنی میں کھڑے ہوکر پوجا کرنا، اپنی چھت پر گوبر کنڈوں سے دھواں کرنا، ماتھا پیٹ کر غم ظاہر کرنایا 1دن پورے برت رکھنا۔ غورطلب ہے کہ وزیراعظم نریندر مودی کے اعلان پر بھوپال سمیت مدھیہ پردیش کے دیگر اضلاع میں دیپ اور لائٹ جلائیں گئے۔ اس دوران لوگوں نے بھارت ماں کی جے کی نعرے بھی لگائے۔ وہیں ریاست میں لوگوں نے بڑی تعداد میں پٹاخے بھی جلائے۔اس سے قبل وزیراعظم نے 28مارچ کو باشندوں سے اپیل کی تھی کہ وہ شام کے 5بجے تالی،تھالی اور شنکھ بجاکر کورونا وائرس سے لڑرہے لوگوں کا شکریہ ادا کریں۔