تہواروں کی وجہ سے ٹیمیں فعال نہیں:

5 دنوں میں صرف 15 نئے مریض آئے سامنے،پہلے آتے تھے ایک دن میں اوسطاً 15مریض- اندور05نومبر(نیا نظریہ بیورو)شہر میں ڈینگو کے مریضوں کی تعداد میں غیر متوقع کمی آئی ہے لیکن یہ کمی کسی وجہ سے نہیں بلکہ صرف اعدادوشمار پر ہے۔ دراصل تہواروں کی وجہ سے تقریباً ایک ہفتے سے میونسپل کارپوریشن، محکمہ صحت اور ملیریا کی سرگرمیاں کافی کم ہو گئی ہیں، جس کی وجہ سے چھ دنوں میں صرف 15 نئے مریض رپورٹ ہوئے ہیں۔جب کہ اوسطاً ہر دن15 نئے مریض سامنے آ رہے ہیں۔ عین ممکن ہے کہ اگر اگلے ہفتے ان مریضوں کو ریکارڈ پر لیا جائے تو یہ تعداد اچانک بڑھ سکتی ہے۔
اس سے قبل 30 اکتوبر کو 10 نئے مریض پائے گئے تھے۔ ان سمیت مریضوں کی کل تعداد 804 ہوگئی۔ اس دن 15 فعال مریض رپورٹ ہوئے جبکہ 11 مریض داخل تھے۔ اس کے بعد اتوار کی چھٹی ہونے کی وجہ سے معلومات نہیں دی گئیں۔ اس کے بعد بدھ کو 15 نئے مریضوں کی معلومات دی گئیں۔ اس طرح بدھ تک کل 819 مریض تھے۔ دریں اثنادھن تیرس، روپ چودس اور دیوالی کی تعطیلات ہونے کی وجہ سے اطلاع نہیں ملی۔ اب ہفتے کو بھائی دوج ہے اور اتوار چھٹی ہے۔
درحقیقت اس سے قبل میونسپل کارپوریشن کی 14 ٹیمیں اور ملیریا ڈپارٹمنٹ کی 20 ٹیمیں شہر بھر میں مجموعی طور پر 34 ٹیمیں اس طرح سے ڈینگو کے مریضوں اور ان کے گھروں کے اردگرد لاروا کے نمونے لینے سے قبل اسپرے کرتی تھیں، لیکن تقریباً ایک ہفتہ گزر چکا ہے۔ اس کام میں کوئی رفتار نہیں ہے۔ یوں تو اس سال محکمہ ملیریا کے ریکارڈ میں ڈینگو کے کل 819 مریض سامنے آئے ہیں لیکن اس سال پرائیویٹ اسپتالوں میں ڈینگو کے کئی نئے مریض سامنے آئے ہیں اور کچھ اموات بھی ہوئی ہیں جو کہ سرکاری ریکارڈ پر نہیں ہیں۔