ممکنہ تیسری لہر کے پیش نظر:

ایم بورڈ کے 10ویں اور 12ویں کے امتحانات مارچ کے بجائے فروری میں ہونگے شروع
بھوپال05نومبر(نیا نظریہ بیورو)پچھلے دو سالوں سے ایم پی بورڈ کے 10ویں اور 12ویں کے امتحانات نہیں لیے جا رہے ہیں۔ ایسے میں اس بار بورڈ نے دونوں کلاسوں کے امتحان وقت سے پہلے کرانے کا فیصلہ کیا ہے۔ اب تک یہ امتحان یکم مارچ سے شروع ہوتے تھے لیکن اس مرتبہ فروری میں شروع ہوجائیںگے۔ یہ فیصلہ دو اہم وجوہات کی بنا پر لیا گیا ہے۔ پہلا یہ کہ بورڈ کو خدشہ ہے کہ دونوں بار کورونا کی لہر مارچ کے آخر میں ہی آئی ہے۔
ابھی کورونا کے زیادہ کیس نہیں ہیں لیکن نئے متاثرین اب بھی مل رہے ہیں۔ اس بار بھی مارچ میں ہی کیس بڑھنے کا امکان ہے۔ اس کے ساتھ ہی سی بی ایس ای کا پریکٹیکل امتحان فروری میں ہوجاتی ہے جبکہ تحریری امتحان مارچ میں ہوتا ہے۔ اسی وجہ سے بورڈ نے اس بار امتحان فروری میں شروع کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ یہ امتحانات22 مارچ سے شروع ہوکر 31 مارچ کو ختم ہوں گے۔
اسکول دیر سے کھلنے کی وجہ سے ابھی تک کورس مکمل نہیں ہو سکا ہے۔ امتحان کا جلد انعقاد کرنے سے طلباءکو تیاری کے لیے کم وقت ملے گا۔ ایسے میں طلباءکو ابھی سے پڑھائی پر توجہ دینی ہوگی۔ اس سال سے پیپر میں 40 فیصد سوالات آبجےکٹیوہوں گے۔ اس سے طلبہ کو پاس ہونے میں آسانی ہوگی۔
اب تک بورڈ دونوں کلاسوں کے امتحان یکم مارچ سے شروع کرتا تھا۔ یہ اپریل تک جاری رہا کرتے تھے۔ فروری میں ہی پرچہ کرانے کے پیچھے یہ دلیل ہے کہ اگر کورونا آتا بھی تو تب تک امتحان ہو چکا ہوگا۔ اس صورت میںفارمولہ نتیجہ بنانے کی ضرورت نہیں ہوگی۔ دو سال سے طلبہ کو صرف فارمولے کے نتائج کی بنیاد پر پاس کیا جا رہا ہے۔
گزشتہ سال محکمہ اسکول ایجوکیشن نے فارمولے کی بنیاد پر نتیجہ تیار کیا تھا۔ تمام طلباءکو وزیر اسکول ایجوکیشن کی ہدایت پر پاس کیا گیاتھا۔ اس کے ساتھ ہی نتائج سے ناخوش طلبہ کو خصوصی امتحان میں شرکت کا اختیار دیا گیا تھا۔ ریاست کے کچھ طلباءنے خصوصی امتحان دیا تھا۔ اس سے قبل یہ شرط رکھی گئی تھی کہ مخصوص امتحان دینے والے طلبہ کا نتیجہ اس امتحان کا نتیجہ تصور کیا جائے گا۔ ایسی حالت میں اگر کوئی ناکام ہو جائے تو اسے ناکام سمجھا جائے گا۔ تاہم بعد ازاں بورڈ نے اپنا فیصلہ تبدیل کرتے ہوئے دونوں امتحانات کے بہتر نتائج کو قبول کرنے کا فیصلہ کیا۔ چنانچہ تمام طلبہ پاس ہو گئے۔