مودی نے اسرائیل نیپال کے وزیر اعظم اور یوکرین کے صدر کے ساتھ دو طرفہ میٹنگ کی

گلاسگو/نئی دہلی، 2 نومبر: وزیر اعظم نریندر مودی نے منگل کو یہاں موسمیاتی تبدیلی پر اقوام متحدہ کی جنرل کانفرنس ‘سی اوپی-26’کے موقع پر اسرائیل کے وزیر اعظم نفتالی بینیٹ، نیپال کے وزیر اعظم شیر بہادر دیوبا اور یوکرائن کے صدر ولادیمیر زیلنسکی سمیت کئی رہنماؤں کے ساتھ دو طرفہ میٹنگ کی۔میں شرکت کی۔
وزیر اعظم مودی اور ان کے اسرائیلی ہم منصب نے پیر کو سی اوپی -26 کے موقع پر ملاقات کی تھی اور پرانے دوستوں کی طرح بات چیت کی تھی، حالانکہ یہ ان کی پہلی ملاقات تھی، جو دونوں ممالک کے درمیان قریبی تعلقات کی نشاندہی کرتی ہے۔
منگل کو، دونوں رہنماؤں نے اپنی پہلی دو طرفہ بات چیت کی، جس کے دوران دونوں فریقوں نے دو طرفہ تعلقات کا جائزہ لیا اور اعلی ٹیکنالوجی اور اختراع کے شعبوں میں تعاون بڑھانے پر تبادلہ خیال کیا۔
وزارت خارجہ کے ترجمان ارندم باگچی نے ٹویٹ کیا، “ہمارے اسٹریٹجک پارٹنر کے ساتھ اپنے تعلقات کو جاری رکھتے ہوئے، وزیر اعظم نریندر مودی نے گلاسگو میں اسرائیل کے وزیر اعظم نفتالی بینیٹ سے ملاقات کی۔ پہلی ملاقات میں دونوں رہنماؤں نے دوطرفہ تعلقات کا جائزہ لیا اور اعلیٰ ٹیکنالوجی اور اختراع کے شعبوں میں تعاون بڑھانے پر تبادلہ خیال کیا۔
اس سال کے شروع میں نیپال کے وزیر اعظم بننے کے بعد مسٹر دیوبا کے ساتھ مسٹر مودی کی یہ پہلی ملاقات بھی تھی۔ دونوں نے دوطرفہ تعلقات کو مزید گہرا اور مضبوط بنانے پر تبادلہ خیال کیا۔
ترجمان نے ٹویٹ کیا، “وزیر اعظم نریندر مودی نے آج نیپال کے وزیر اعظم شیر بہادر دیوبا سے ملاقات کی۔ وزیر اعظم دیوبا کے عہدہ سنبھالنے کے بعد اپنی پہلی ملاقات میں، دونوں رہنماؤں نے ہمارے قریبی دو طرفہ تعلقات کو مزید مضبوط بنانے کے طریقوں پر تبادلہ خیال کیا۔ اس کے علاوہ، آب و ہوا، کووڈ-19 پر بھی تبادلہ خیال کیا اور اس وبا سے صحت یاب ہونے کے لیے مل کر کام کرنے کا عزم کیا۔‘‘
جناب مودی نے یوکرین کے صدر سے بھی ملاقات کی۔ وزیر اعظم مودی نے کووڈ-19 وبائی مرض کے دوران یوکرین کے تعاون کی تعریف کی جس میں کورونا ویکسینیشن سرٹیفکیٹس کی باہمی شناخت بھی شامل ہے۔
وزارت خارجہ کے ترجمان نے ٹویٹ کیا، “وزیر اعظم نریندر مودی نے سی اوپی-26 کے موقع پر آج یوکرین کے صدر زیلنسکی سے ملاقات کی۔ دونوں رہنماؤں نے دوطرفہ اور علاقائی پیش رفت پر اپنے خیالات کا تبادلہ کیا۔ جس میں کووڈ-19 وبا کے دوران ہندوستان یوکرین تعاون کی بھی ستائش کی، جس میں کووڈ 19 ٹیکہ کاری سرٹیفکیشن کی باہمی شناخت بھی شامل ہے۔‘‘