کول انڈیا ڈیزل ڈمپروں کو ایل این جی میں تبدیل کرے گا، ایندھن پر 500 کروڑ روپے کی بچت نئی دہلی، 2 نومبر: کاربن کے اخراج کو مزید کم کرنے کے لیے دنیا کی سب سے بڑی کوئلہ پیدا کرنے والی کمپنی کول انڈیا لمیٹڈ (سی آئی ایل) نے کوئلہ لے جانے کے لیے اپنے بڑے ٹرکوں (ڈمپروں) میں لیکویفائیڈ نیچرل گیس (ایل این جی) کٹس لگانے کا پروگرام شروع کیا ہے۔ کمپنی کا اندازہ ہے کہ اس سے کاربن کے اخراج کی سطح میں کمی آئے گی اور اس کے ایندھن کی لاگت میں سالانہ 500 کروڑ روپے کی بچت ہوگی۔ ایک بیان کے مطابق، کمپنی نےگیل (انڈیا) لمیٹیڈ اور بی ای ایم ایل لمیٹیڈ کے تعاون سے گیل اور بی ای ایم ایل کے ساتھ ایک مفاہمتی عرضداشت کی اپنی معاون مہاندی کول فیلڈز لمیٹڈ (ایم سی ایل) میں آپریٹ اپنے 100 ٹن کے دو ڈمپروں میں ایل این جی کٹ کو دوبارہ لگانے کے لیے ایک پائلٹ پروجیکٹ شروع کیا ہے۔

ژنئی دہلی، 2 نومبر: کاربن کے اخراج کو مزید کم کرنے کے لیے دنیا کی سب سے بڑی کوئلہ پیدا کرنے والی کمپنی کول انڈیا لمیٹڈ (سی آئی ایل) نے کوئلہ لے جانے کے لیے اپنے بڑے ٹرکوں (ڈمپروں) میں لیکویفائیڈ نیچرل گیس (ایل این جی) کٹس لگانے کا پروگرام شروع کیا ہے۔

کمپنی کا اندازہ ہے کہ اس سے کاربن کے اخراج کی سطح میں کمی آئے گی اور اس کے ایندھن کی لاگت میں سالانہ 500 کروڑ روپے کی بچت ہوگی۔

ایک بیان کے مطابق، کمپنی نےگیل (انڈیا) لمیٹیڈ اور بی ای ایم ایل لمیٹیڈ کے تعاون سے گیل اور بی ای ایم ایل کے ساتھ ایک مفاہمتی عرضداشت کی اپنی معاون مہاندی کول فیلڈز لمیٹڈ (ایم سی ایل) میں آپریٹ اپنے 100 ٹن کے دو ڈمپروں میں ایل این جی کٹ کو دوبارہ لگانے کے لیے ایک پائلٹ پروجیکٹ شروع کیا ہے۔