مسلمانوں نے گنگا جمنی تہذیب کی مثال کی پیش


ہندو خاتون کی آخری رسومات کی ادا
اندور 6 اپریل(نیا نظریہ بیورو) کورونا وائرس کے انفیکشن کے خوف کے درمیان ، ایسی اطلاعات بھی سامنے آرہی ہیں جن سے پتہ چلتا ہے کہ آج بھی انسانیت زندہ ہے۔ یہاں مسلمانوں نے مشترکہ طور پر ایک ہندو عورت کی آخری رسومات ہندو رواج کے مطابق ادا کیں ۔سیاستدان ہندو اور مسلمانوں کے درمیان صرف اپنے فائدے کے لئے لکیر کھینچتے ہیں ۔ساﺅتھ توڑا کے جونا گنیش مندر میں رہنے والی ایک بزرگ خاتون کئی دنوں سے علیل تھیں۔ محلے کے لوگ اس عورت کو درگا ماں کے نام سے پکارتے تھے۔ صبح ، کچھ مسلم نوجوانوں کو معلوم ہوا کہ درگا ماں کی مو ت ہو گئی اس کی اطلا ع ان کے لڑکوں کو دی گئی جو کہیں باہر رہتے تھے ۔موت کی خبر سن کر آئے لیکن آخری رسومات کیلئے ان کے پاس پیسے نہیں تھے ۔تبھی ان کے محلہ میں رہنے والے عقیل بھائی ، اسلم بھائی ، مدثر بھائی ، راشد ابراہیم ، عمران، سراج وغیرہ نے خاتون کی آخری رسومات ادا کیں۔ مسلمان نوجوانوں نے اس خاتون کو کا ندھا بھی دیا اورمکھا گنی بھی دی ۔