ہیلپ لائن نمبر181پرکی جھوٹی شکایت، کہامیراکنبہ بھوک کاشکار


بھوپال /ودیشہ:6اپریل(نیانظریہ بیورو)
مدھیہ پردیش سے ملحقہ ضلع ودیشہ کے کوروائی میں لاک ڈاو¿ن کی وجہ سے ، ایک دیہاتی نے سی ایم ہیلپ لائن کو فون کیا اور شکایت درج کروائی کہ اس کا کنبہ بھوکا ہے۔ جس کے بعد انتظامیہ نے فوری طور پر شکایت پر عمل درآمد کرکے تفتیش کی۔ جس کے بعد معلوم ہوا کہ شکایت کنندہ کے گھر میں راشن کا کافی سامان موجود نہیں ہے اسے کوئی پریشانی نہیں ہے اور نہ ہی اس کا کنبہ بھوکا ہے۔ جس کے بعد پولیس مذکورہ شخص پر کارروائی کا ارادہ کر رہی ہے۔ذرائع کے مطابق پلوٹو میں کھورائی روڈ پر بجلی کے بورڈ کے سامنے رہنے والے امان سنگھ نے وزیر اعلی ہیلپ لائن کو شکایت کی کہ لاک ڈاو¿ن کی وجہ سے ان کی فرنیچر کی دکان بند ہوگئی ہے۔ جس کی وجہ سے ان کا کنبہ بھوک کے دور سے گزر رہا ہے ، جس پر مقامی انتظامیہ نے فوری طور پر کارروائی کی۔ انتظامیہ نے فوری طور پر گرام پنچایت کو ہدایت دی اور سکریٹری ، ایمپلائمنٹ اسسٹنٹ اور پٹواری سمیت ایک ٹیم گھر پہنچ کر تفتیش کی۔ جس میں شکایت کنندہ امان سنگھ اہیروار کے گھر سے تقریبا -25 30 کلوگرام اناج ، 10-15 کلو آٹا اور کھانے پینے کی مقدار کافی مقدار میں ملی ہے۔ شکایت کنندہ امان سنگھ اہیروار نے کہا کہ عوام سے وعدے کرنے والے انتظامیہ اپنے وعدوں پر پورا اترتی ہے۔ اس مقصد کے لئے وزیر اعلی ہیلپ لائن پر شکایت درج کی گئی تھی۔ گورننس اور انتظامیہ میں فوری کارروائی نے اعتماد کو زندہ کردیا۔ یہ کارروائی چند گھنٹوں میں مکمل ہوگئی۔ اپنی جھوٹی شکایت پر شرمندہ ہوکر ، انہوں نے انتظامیہ سے معافی مانگ لی۔
غورطلب ہے کہ امان سنگھ اہیروار نے اپنا نام گرام پنچایت میں درج کیا ہے۔ مجموعی طور پرآئی ڈی دونوں جگہوں سے ہے۔ جس میں شوہر اور بیوی اور تین بیٹوں سمیت 5 افراد کے نام درج ہیں۔ دونوں جگہوں سے 25-25 کلو گرام اناج لیا جاتا ہے۔ کچھ مہینے پہلے ، حکومت نے اناج کی اہلیت پرچی چیک کروائی۔ جن کے سوالات کو انصاف اور تفتیش پر ڈالا جارہا ہے۔ انچارج تحصیلدار سی کے تمرکر نے بتایا کہ امان سنگھ کی دو گرام پنچایتوں میں بیک وقت ایک ہی نام سے راشن لینے کی شکایت موصول ہوئی ہے۔ جس کی تحقیقات متعلقہ محکمہ کرے گا۔ شکایت کی تصدیق پر آئینی کارروائی کی جائے گی۔