13میڈیکل کالجوں کے 3300ڈاکٹر استعفیٰ پیش کر، 9جنوری کو کریں گے احتجاج

بھوپال:3دسمبر(نیانظریہ بیورو)
مدھیہ پردیش میں اپنے مطالبات کو لیکر ریاست کے تمام13سرکاری میڈیکل کالجوں کے 3300 میڈیکل ٹیچرس کا احتجاج جاری ہے۔ بروز جمعرات بھوپال کے گاندھی میڈیکل کالج کے 310 ڈاکٹروں نے اپنے مطالبات کو لے کر استعفیٰ نامہ سونپ دیا تھا۔ آج بروز جمعہ جیاروگ میڈیکل کالج کے 300ڈاکٹروں نے ڈکل کالج کی ڈین ڈاکٹر سروج کوٹھاری اور ڈیویزنل کمشنر ایم بی اوجھا کو اپنا میمورنڈم سونپا۔ اس کے علاوہ دیگر میڈیکل کالجوں کے 3300سینئر ڈاکٹرس ڈین کو آج استعفیٰ نامہ سونپیں گے۔ اس کے بعد 9جنوری سے کام بند کردیں گے۔
دراصل میڈیکل ٹیچرس اپنے مطالبات کو لے کر احتجاج کررہے ہیں۔ ستمبر میں بھی احتجاج کیا گیا تھا۔ اس وقت صرف دودن تک ریاست کے میڈیکل ٹیچرس نے کام نہیں کیا تھا۔ حکومت نے میڈیکل ٹیچرس کے تمام مطالبات پورا کرنے کا یقین دہانی کی تھی۔ لیکن مطالبات پوری نہیں ہونے کے بعد سینٹرل میڈیکل ٹیچرایسوئیشن کی میٹنگ میں استعفیٰ دینے کا اعلان کیا گیا تھا۔ اس کے بعد ایسو ئیشن کے عہدیداران نے رابطہ عامہ پی سی شرما سے ملاقات کی، لیکن کوئی فائدہ حاصل نہیں ہوا۔ اس کے بعد بروز جمعرات کو کابینہ میں میڈیکل تعلیمی وزیر ڈاکٹر وجے لکشمی سادھو ،پرنسپل سکریٹری شیوشیکھر شکلا کی موجودگی میں مدھیہ پردیش میڈیکل ٹیچرس ایسوسی ایشن کے عہدیداران رابطہ عامہ وزیرپی سی شرما سے ملاقات کی۔لیکن اس ملاقات سے کوئی فائدہ نہیں مل سکا۔وہیں وزیرکاکہنا ہے کہ ہم آپ کے مطالبات پرغورکررہے ہیں۔تحریک کولیکر جلد بازی مت کرو،لیکن ایسوسی ایشن اس سے بھی متفق نہیں ہے۔جس کی وجہ سے اب متفقہ طورپرتمام اساتذہ نے متحدہوکر استعفیٰ ڈین کوسونپ کر9 جنوری سے ہی کام بندکرنے کی دھمکی دیدی ہے۔وہیں اب تک کئی اساتذہ نے استعفیٰ سونپ دیاہے اورباقی افراد استعفیٰ سونپنے کی تیاری میں ہیں۔