کورونا ٹیسٹنگ اور اسپتالوں میں سہولیات پر توجہ دے حکومت: مایاوتی

لکھنؤ: عالمی وبا کووڈ۔19 کے اتر پردیش میں بڑھتے معاملات کے تئیں تشویش کا اظہار کرتے ہوئے بہوجن سماج پارٹی (بی ایس پی) سپریمو مایاوتی نے ٹیسٹنگ کی رفتار میں اضافہ اور کووڈ اسپتالوں کی سہولیات پر دھیان دینے کا مطالبہ کیا ہے۔
مایاوتی نے ہفتہ کو اپنے ٹوئٹ میں لکھا ’’ملک کے سب سے بڑے صوبے اترپردیش میں کورونا وبا کے مریضوں کے آئے دن بڑھتی تعداد یہاں کے عوام جس طرح سے کافی فکر مند اور پریشان ہیں۔ اس کے پیش نظر بی ایس پی کا مطالبہ ہے کہ کورونا ٹیسٹنگ، اسپتالوں میں سہولیات اور کووڈ مراکز کی صاف۔صفائی وغیرہ پر حکومت فورا دھیان دے۔‘‘
قابل ذکر ہے کہ یوپی میں گزشہ 15 دنوں میں کورونا مریضوں کی تعداد میں ڈھائی گنا اضافہ ہوا ہے۔ اس درمیان حالانکہ کورونا ٹیسٹنگ کی رفتار بھی بڑھی ہے اور کل ریاست میں 50 ہزار سے زیادہ نمونوں کی جانچ کی گئی۔
پرینکا گاندھی نے بھی دیا مشورہ
کانگریس کی جنرل سکریٹری پرینکا گاندھی نے بھی وزیر اعلیٰ یوگی آدتیہ ناتھ کو خط لکھ کر کورونا وائرس کے بحران سے نمٹنے کے لئے کئی تجویزات پیش کی ہیں۔ پرینکا گاندھی نے لکھا کہ کورونا بحران کی صورت حال سنگین ہے لہذا تشہیر سے کام نہیں چلے گا بلکہ مؤثر اقدامات اٹھانے ہوں گے۔
پرینکا گاندھی نے خط میں لکھا، ’’اتر پردیش میں جمعہ کے روز کورونا کے 2500 کیسز کی تصدیق ہوئی اور تقریباً تمام بڑھے شہروں میں کورونا کے معاملوں کا سیلاب آ گیا ہے۔ اب تو گاؤں دیہات بھی اس سے اچھوتے نہیں ہیں۔ صاف ظاہر ہوتا ہے کہ آپ کی حکومت نے ’نو ٹیسٹ – نو کورنا‘ کو اصول مان کر کم تعداد میں جانچ کی پالیسی اختیار کی ہوئی ہے۔ اب کورونا کیسز کی صورت حال دھماکہ خیز ہے۔ جب تک شفافیت کے ساتھ چانچ نہیں کی جاتی، جب تک یہ لڑائی ادھوری رہے گی اور صورت حال مزید خراب ہو سکتی ہے۔