کوروناکی زد میں ڈاکٹرس : مریضوں کے علاج میں مصروف ڈاکٹروں نے خودکوخاندان سے کیا الگ


بھوپال:4اپریل(نیانظریہ بیورو)موجودہ وقت میں کوروناانفیکشن سے پورا ملک جوجھ رہاہے۔وہیں مدھیہ پردیش کی راجدھانی میں بھی کورونا متاثرہ مریضوں کی دیکھ بھال اوران کاعلاج کررہے ڈاکٹروکاکہنا ہے کہ ہم اپنی طرف سے پوری کوشش کررہے ہیں کہ مریض باکل ٹھیک ہوجائے۔اس دوران ہم اپنے گھربھی نہیں جاپارہے ہیں ،کیوں کہ کہیں نہ کہیں یہ بھی خطرہ رہتا ہے کہ ہم میں سے کوئی بھی اس کورونا سے متاثرہوسکتا ہے۔اس لئے ہم نے خود الگ کررکھا ہے بہت ضروری ہونے پرہم گھرجاتے ہیں لیکن وہاں بھی ہم پوری طرح احتیاط کے دائرے میں رہتے ہیں۔ غورطلب ہے کہ راجدھانی میں کورنٹائین مرکز کے ایڈوانس میڈیکل کالج کے ڈاکٹروں نے اپنی رہائش اسپتال کے قریب ہی اختیارکرلیاہے، تاکہ وہ ہر وقت مریضوں کے آس پاس رہ سکیں ، جس کی وجہ سے وہ اپنے کنبہ کے افراد سے بھی نہیں مل پارہے ہیں۔اپنی حالت کے بارے میں ، ڈاکٹر اوپیندر کا کہنا ہے کہ ایڈوانس میڈیکل کالج تقریبا ً 5 سال سے بند تھا ، اسے سہولیات والاکورنٹائین مرکز بنانا ہمارے لئے سب سے بڑا چیلنج تھا ، کیونکہ ہمیں یہ مرکز جنتا کرفیو کے بعد ملا ہے۔ جس کی وجہ سے ہمیں سامان بھی نہیں مل سکا۔ ہم تب سے یہاں مقیم ہیں اور اس دوران اپنے کنبہ کے ممبروں سے ٹھیک طرح سے نہیں مل سکے ہیں تاکہ یہاں کے انتظامات کا فقدان نہ ہو۔اسی کے ساتھ ، ڈاکٹر آر پی پٹیل نے بتایا کہ ڈاکٹر کا کنبہ ہنگامی صورتحال کے لئے ہمیشہ تیار رہتا ہے ، لیکن اس وقت ایسے حالات ہیں کہ کنبہ بھی جانتا ہے کہ تھوڑا سا وائرل انفیکشن بھی مشکل پیداکرسکتا ہے ، لہذا وہ ہمارے ساتھ بھی ہم آہنگی کر رہے ہیں اور ہم بھی اسی وقت گھر جاتے ہیں جب کہ بہت ضروری ہوتا ہے۔وہیں دیگرڈاکٹروں کابھی کہنا ہے کہ ہم نے خود کواپنے خاندان سے الگ کررکھاہے تاکہ ہم مریضوں کی دیکھ بھال ٹھیک طرح سے کرسکیں۔