سابق وزیراعلیٰ کمل ناتھ نے وکاس دوبے کے اُجین میں سرینڈر کو سازش بتایا


بھوپال:9 جولائی (نیانظریہ بیورو)
اترپردیش کے کانپور کے خونخوار گینگسٹر وکاس دوبے کے ا±جین میں سرینڈر کو لے کر سابق وزیراعلیٰ کمل ناتھ نے کئی سوالات اٹھائے ہیں۔ انہوں نے ٹویٹ کرکہاہے کہ وکاس دوبے کے اجین میںمہاکال مندر میں خود کوسرینڈر کرنے کے واقعے کی اعلی سطحی جانچ ہونی چاہئے۔ اس میں کسی بڑی سیاسی سازش کی بو آ رہی ہے۔ ان کا کانپور سے محفوظ طور پرمدھیہ پردیش کے ا±جین پہنچنا اور مہاکل مندر میں داخل ہونا ، پھر خود چیخ چیخ کر خود کو گرفتار کروانا کئی شکوک و شبہات کوپیدا کردیا ہے ، جو کسی سرپرستی کی طرف اشارہ کررہا ہے۔اس کے ساتھ ہی انہوں نے کہا کہ مدھیہ پردیش میں بی جے پی کی حکومت آتے ہی مافیا ریاست لوٹ رہے ہےں۔ اورریاست مافیاﺅں کا ایک محفوظ ٹھکانہ بنتی جارہی ہے۔دراصل سابق وزیراعلیٰ کمل ناتھ نے ٹویٹ کر کہاکہ اترپردیش کے کانپور کے خونخوار گینگسٹر8پولس اہلکاروں کے قتل کا ملزم وکاس دوبے کے اُجین کے مہاکال مندر میں خود کوسرینڈر کرنے کے واقعے کی اعلی سطحی تحقیقات ہونی چاہئے ،اتنے بڑے انعامی مجرم جس کو پولیس دن رات تلاش رہی ہے ان کاا ترپردیش کے کانپور سے مدھیہ پردیش کے اُجین تک آنا اور مہاکال مندر میںداخل ہونا اور خود کوچیخ چیخ کرگرفتار کرواناکئی شکوک وشبہات کو پیدا کرتا ہے۔جس کی اعلیٰ سطحی جانچ ہونی چاہئے۔