بی جے پی ایم ایل اے ہرشنکر کھٹیک نے خود کو وزیر نہیں بنائے جانے پر کیا مایوسی کا اظہار

Varanasi / India 25 April 2019 BJP party workers and supporters waved the Lotus print flags during PM Narendra Modi road show in Varanasi northern Indian state of Uttar Pradesh; Shutterstock ID 1385470790; Purchase Order: FIX0007020 ; Project: year in review; Client/Licensee: encyclopedia britannica

بھوپال:2جولائی (نیانظریہ بیورو)
مدھیہ پردیش میں اقتدار بدلنے کے 100دن کے بعد آخر شیوراج کابینہ کی توسیع ہوگئی ہے۔ نئے وزراءکابینہ میں بی جے پی کی طرف سے 16نئے چہروں کو کابینہ میں شامل کیا گیا ہے،اس کے ساتھ ہی کچھ ایسے لیڈر ان کوبھی وزیربنایاگیا ہے جو کانگریس چھوڑ بی جے پی میں شامل ہوئے تھے۔ جہاں ایک طرف راج بھون میں حلف برداری پروگرام کا انعقاد کیا جارہا تھا۔ وہیں دوسری طرف بی جے پی کے ریاستی دفتر میں بالکل سنناٹا تھا۔ حالانکہ بی جے پی ایم ایل اے ہری شنکر کھٹیک اپنے کچھ حامیوں کے ساتھ دفتر پہنچے تھے۔ جہاں ان کی مایوسی واضح طور پر دیکھی جارہی تھی۔ کھٹیک نے باتوں باتوں میں کہا کہ کانگریس ایم ایل ایز کے آنے سے پارٹی ممبران میں اضافہ ہوا ہے۔ ایسے میں سب کا وزیر بننا ممکن نہیں تھا۔ دراصل بی جے پی کی طرف سے 4بار کے ایم ایل اے ہری شنکر کھٹیک نے شیوراج کابینہ میں اپنے وزیر بننے کے سوال پر کہا کہ کانگریس ایم ایل ایز کے بی جے پی میں شامل ہونے کی وجہ سے پارٹی ممبران میں اضافہ ہوا ہے۔ایسے میں ہمیں پارٹی کے بارے میں سوچتے ہوئے ان کی بات سمجھنی چاہئے۔کیونکہ انہیں کی وجہ سے ریاست میں ہماری حکومت بن پائی ہے۔ ایسے حالات میں سبھی کو شیوراج کابینہ میں وزیر بنانا بھی ممکن نہیں ہے۔ فی الحال ہائی کمان کی طرف سے جنہیں لائق سمجھا گیا انہیں وزیرکاعہدہ دیا گیا ہے۔ حالانکہ اسی کے ساتھ ہری شنکر نے یہ بھی کہا کہ وہ بھی وزیرعہدہ کے لائق تھے لیکن تکلیف کی کوئی بات نہیں ہے۔ اسی کے ساتھ ہی بی جے پی ایم ایل اے نے پارٹی پر یقین کرتے ہوئے کہا کہ پارٹی آگے انہیں جو بھی ذمہ داری دیگی، وہ اسے پورا کریںگے اور پارٹی کے ساتھ رہیںگے۔