ریاست میں بسوں کے چلنے کی جلد اجازت دی جائے :کمل ناتھ


بھوپال:2جولائی (نیانظریہ بیورو)
پوری ریاست میں لاک ڈاﺅن کے ساتھ ہی بسوں کی خدمات پر روک لگادی تھی۔ جو کہ تین مہینے بعد بھی شروع نہیں ہوپائی ہے۔ بس آپریٹر اور حکومت کے درمیان چل رہی رسہ کشی کی وجہ سے بھوپال سمیت پوری ریاست میں مسافر بسوں کی خدمات شروع نہیں ہوپائی ہے۔ بس آپریٹروں کا کہنا ہے کہ مطالبات پورے کئے جانے کے بعد ہی وہ بسوں کی خدمات شروع کریںگے۔ وہیںسابق وزیراعلیٰ کمل ناتھ نے وزیراعلیٰ شیوراج سنگھ چوہان کو خط لکھ کر محکمہ ٹرانسپورٹ اورنقل وحمل کے پیشہ ور افراد کی تعطیل کو ختم کر جلد ہی بسوں کی خدمات شروع کرانے کا مطالبہ کیا ہے۔ وزیراعلیٰ شیوراج کو سابق وزیراعلیٰ نے خط میں لکھا کہ کورونا وباءپرقابوپانے کے لئے پورے ملک میں لاک ڈاﺅن نافذ کیا گیا تھا اور اس مدت کار میں ریاست کےتمام نقل وحمل کی سہولیات کو مکمل طور پر روک لگادیا گیا تھا۔ اب ملک میں ان لاک شروع ہونے پر ریاست کے تمام نقل وحمل نظام کو باضابطہ طور پر شروع کرنے کی ہدایت دی جائے ،اور بسوں کی خدمات کو 50فیصد مسافر کے ساتھ شروع کرنے کی اجازت دی جائے ۔ لیکن تمام طرح کے نقل وحمل پیشہ وروں اور محکمہ نقل وحمل کے مابین ٹیکس میں رعایت اور دیگر مطالبات کو لے کر رکاوٹ کی وجہ سے تمام نقل وحمل نظام شروع نہیں ہوپایا ۔ جس کی وجہ سے مدھیہ پردیش میں عام عوام کو آج بھی نقل وحمل میںدشواریوں کا سامنا کرنا پڑرہا ہے۔
دراصل کمل ناتھ نے لکھا ہے کہ لاک ڈاﺅن کی وجہ سے بس مالکان کو سب سے زیادہ اقتصادی نقصان ہوا ہے اور 50فیصد مسافر کے ساتھ بسوں کی خدمات شروع کرنے پر انہیں کافی نقصانات کا سامنا کرنا پڑے گا۔ اس کے ساتھ ہی گذشتہ 20دنوں میں ڈیزل کی قیمتوں میں ہوئے اضافہ کی وجہ سے بس مالکان کی فکر میں مزید اضافہ ہوگیا ہے۔ ایسے حالات میںٹرانسپورٹ آپریٹروںکے ذریعہ کئے جارہے راحت کے مطالبے بھی مناسب معلوم ہوتے ہےں۔ سابق وزیراعلیٰ نے مزید کہا کہ پوری ریاست میں 22000سے زائد بس مالکان کے ذریعہ ریاست میں تقریباً35000بسیں چلائی جاتی ہیں۔ ان تمام بسوںسے ریاست کے تقریباً50لاکھ عوام روزانہ سفر کرتے ہیں۔ اور ان انتظامات کے شروع نہیں ہونے کی وجہ سے لاکھوں عوام کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑرہا ہے۔کمل ناتھ نے مطالبہ کیا ہے کہ ریاست کی لاکھوں عوام کیلئے نقل وحمل کی سہولیات مہیا کرانے کے لئے محکمہ نقل وحمل اوربس آپریٹروں کی تعطیل کو ختم کریں تاکہ ریاست میں نقل وحمل کی سہولیات بہتر طریقے سے شروع ہوسکے ، اور ریاست کی عوام کو راحت مل سکے۔