کابینہ توسیع کے ساتھ ہی بی جے پی کا براوقت ہوگا شروع: کانگری


بھوپال:29جون(نیانظریہ بیورو)
کمل ناتھ حکومت گراکر بی جے پی کے شیوراج سنگھ 23مارچ کو وزیراعلیٰ کے عہدہ پر تو قابض ہوگئے۔ لیکن 3مہینے گذرجانے کے بعد بھی ان کے کابینہ توسیع نہیں ہوپائی ہے۔ پارٹی کے اندر چل رہی رسہ کشی ، سندھیا حامی سابق ایم ایل اےز کو ایڈجسٹ کرنے اور ضمنی انتخابات کے مساوات کو دیکھتے ہوئے کسی نہ کسی بہانے کابینہ توسیع ٹلتی رہی ،لیکن اب کابینہ توسیع کی تیاری شروع ہوگئی ہے۔ جس کو لے کر ریاستی کانگریس کا کہنا ہے کہ غیر ایم ایل اےز کو وزیر بناکر بی جے پی جمہوریت کی بے حرمتی کررہی ہے۔ اور اس کے ساتھ ہی بی جے پی شیوراج حکومت کی بدقسمتی کی شروعات ہونے والی ہے۔ دراصل جولائی میں اسمبلی سیشن شروع ہونے والا ہے اور اس سیشن میں بجٹ بلیٹن منظور ہونا ہے۔ اسمبلی کے سرکاری کاموں کے لئے کئی معاملوں میں کابینہ منظوری کی ضرورت ہوتی ہے۔ شیوراج کابینہ کا فی الحال کورم پورا نہیں ہے۔کورم پورا کرنے کے لئے کم سے کم 12وزیر ہونا ضروری ہے۔ اس لئے کابینہ توسیع کی تیاری کی جارہی ہے۔ اس معاملے میں ریاستی کانگریس کے محکمہ میڈیا کے نائب صدر بھوپیندر گپتا کا کہنا ہے کہ بی جے پی کی شیوراج حکومت کا براوقت شروع ہونے والا ہے، کابینہ توسیع میں غیر ایم ایل ایز کو وزیر بناکر۔ ساتھ ہی انہو ںنے کہا کہ بی جے پی جمہوریت کی بے حرمتی کی نئی شروعات کرنے جارہی ہے۔ اس نظم سے پیدوار کو خریدنے،دھمکانے ،فروخت کرنے کی روایات کی شروعات کرکے بی جے پی جمہوریت کو نہ جانے کہاں لے جائے گی۔