نروتم مشرانے کہاتھا کہ جب خواتین شراب پی سکتی ہیں تو بیچ کیوں نہیں سکتی

ریاستی وزیرداخلہ کے متنازعہ بیان پر پی سی شرما نے بولا حملہ

بھوپال:16جون(نیانظریہ بیورو)
مدھیہ پردیش کی سیاست میں ان دنوں الزام تراشی کا دور مسلسل جاری ہے۔ ایک دوسرے کو نشانہ بنارہے ہیں۔ اس سلسلے میں ریاست میں اقتدار جانے کے بعد سے اپوزیشن مسلسل حکومت پر حاوی ہے۔ اسی دوران مارکیٹ میں مودی ماسک ،شیوراج ماسک فروخت کئے جانے پر سابق وزیر پی سی شرما نے بی جے پی پر بڑا حملہ بولا ہے۔ شرمانے کہا کہ ماسک پر جو چہرے لگے ہیں بی جے پی کے اصلی چہرے وہی ہیں۔ دراصل بروز منگل میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے سابق وزیرپی سی شرما نے بی جے پی پر نشانہ سادھتے ہوئے کہا کہ مارکیٹ میں وہ ماسک تقسیم کیاجارہا ہے۔جس میں مودی ،شیوراج جیسے کئی طرح کے ماسک شامل ہےں۔ جس پر بولتے ہوئے شرما نے مزیدکہا کہ ماسک ہی کورونا ہے۔ وہیں شراب مدعے پرریاستی وزیرداخلہ نروتم مشرا کے متنازعہ بیان پر رد عمل دیتے ہوئے کہا کہ بی جے پی کا اصلی چہرہ یہی ہے۔ جو سب کے سامنے آیا ہے۔اس کے ساتھ ہی ریاست میں بڑھ رہے کورونا وباءپر بولتے ہوئے شرما نے کہا کہ جانچ ہونہیں رہی ہے۔ کورونا مثبت مریضوں کی تعداد میں اضافہ ہوتا جارہا ہے اور حکومت جھوٹے اعداد وشمار پیش کرنے میں مصروف ہے۔ ایسے میں ریاستی حکومت سے امید بھی کیا کی جاسکتی ہے۔غورطلب ہے کہ متنازعہ بیان دیتے ہوئے مشرا نے کہا تھا کہ جب خواتین شراب پی سکتی ہے تو شراب کیوں فروخت نہیں کرسکتی۔ مشرا نے مزید کہا تھا کہ ریوا کی خواتین سب سے زیادہ شراب کی عادی ہیں۔ وہیں کورونا وباءکے دوران ماسک لگانا ضروری ہے۔ اس دوران نئے نئے فیشن کے ماسک بازار وں میں فروخت ہورہے ہیں۔ جس میں وزیراعظم مودی ،راہل گاندھی،شیوراج سنگھ اور کمل ناتھ کے چہرے والا ماسک بھی بازار میں فروخت ہورہے ہیں۔