راجیہ سبھا انتخابات ملتوی کرنے کےلئے اندور ہائی کورٹ میں درخواست دائر


بھوپال:15جون (نیانظریہ بیورو)
مدھیہ پردیش میں ہونے والے راجیہ انتخابات کے بارے میں روزنئے نئے معاملے سامنے آرہے ہیں۔ کبھی کسی تنازعہ کے بعد سیاست گرم ہوجاتی ہے تو کبھی کسی وائرل آڈیو -ویڈیو پر سیاست اپنے رنگ بدل دیتا ہے۔ اسی دوران تین راجیہ سبھا سیٹوں پر ہونے والے انتخابات کوملتوی کرنے کا مطالبہ کیا گیا ہے۔ سماجی کارکن امن شرما نے اندور ہائی کورٹ میں راجیہ سبھا انتخابات کوملتوی کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔ درخواست میں کہا گیا ہے کہ جب تک اسمبلی ضمنی انتخابات نہیں ہوجاتے اس وقت تک راجیہ سبھا انتخابات نہیں ہونا چاہئے۔دراصل بروز پیر سماجی کارکن امن شرما کی طرف سے ایڈوکیٹ ابھینو دھنوتکرنے اندور ہائی کورٹ میں درخواست دائر کی ہے۔ درخواست میں راجیہ سبھا انتخابات کو ملتوی کرنے کا مطالبہ کرنے کے ساتھ یہ بھی کہا ہے کہ اسمبلی ضمنی انتخابات جب تک نہیں ہوجاتے اس وقت تک راجیہ سبھا انتخابات نہیں کرانا چاہئے۔ حالانکہ اس کی حمایت میں دلیل یہ پیش کی گئی ہے کہ جب راجیہ سبھا انتخابات کی نوٹیفکیشن جاری ہوا تھا اس وقت اسمبلی میں 228ایم ایل ایز تھے اور 2سیٹیں خالی تھیں،لیکن اس وقت 10فیصد ایم ایل ایز کم ہوگئے ہیں۔ اور 206ایم ایل ایز ہی رہ گئے ہیں۔ ایسے میں راجیہ سبھا انتخابات ،اسمبلی ضمنی انتخابات کے بعد ہی ہونا صحیح ہے۔ وہیں درخواست دہندگان کے وکیل نے کورٹ میں دی گئی درخواست میں کہا کہ ریپریزیٹیشن آف پیوپلس ایکٹ1950کی دفعہ 245Aکے تحت راجیہ سبھا انتخابات کے تمام حلقوں کے نمائندے ہونے چاہئے، لیکن ابھی پوری ریاست میں 24سیٹیں ایسی ہیں جہاں ایم ایل اےز نہیں ہیں۔ وہیں درخواست میں یہ بھی دلیل پیش کی گئی ہے کہ جب راجیہ سبھا انتخابات کو ملتوی کی گئی تھی اس وقت کل 5000ہی معاملے تھے لیکن اب ملک میں کورونا کے 3لاکھ معاملے ہیں۔ایسے حالات میں انتخابات کرانا بھی مناسب نہیں ہے۔
غورطلبہے کہ راجیہ سبھا انتخابات کو ملتوی کرنے کی درخواست کو ہائی کورٹ نے قبول کرلیا ہے۔ جس کی سماعت آج سے ہی ہونا ہے۔بتایں کہ 19جون کو راجیہ سبھا انتخابات ہونا ہے۔ اس دوران اب دیکھنا دلچسپ ہوگا کہ ریاست کی یہ انتخابیجدوجہد کا رخ کس طرف کرتا ہے۔ وہیں مرکزی انتخابی کمیشن نے نیا نوٹیفکیشن جاری کردیا ہے جس کے مطابق 19جون کو 10ریاستوں کی 24راجیہ سبھا سیٹوں پر انتخابات ہونا ہے۔