کانگریس ہمیشہ سے ہی دلت مخالف رہی ہے:نروتم مشرا


بھوپال:14جون (نیانظریہ بیورو)
راجیہ سبھا انتخابات سے قبل مدھیہ پردیش کی سیاست میں بیان بازی کا دورجاری ہے۔ کبھی برسراقتدار اپوزیشن کو گھیررہی ہے تو کبھی اپوزیشن حملہ آورہورہی ہے۔ خاص بات یہ ہے کہ کورونا وباءکے دوران سوشل میڈیا پر دونوں پارٹیوں کے بیچ الزام تراشی کا دور تیزی سے بڑھ رہا ہے۔ چودھری راکیش سنگھ کے بعد وزیرداخلہ نروتم مشرا نے راجیہ سبھا امیدوار پھول سنگھ بریا کو پہلی توجہ دینے کی بات کہی ہے۔ نروتم مشرا نے ٹویٹ کر لکھا ہے کہ راجیہ سبھا میں دگوجئے سنگھ کو پہلی ترجیح دیکر پھول سنگھ بریا کو راجیہ سبھا نہ بھیج کر دلت مخالف کانگریس اپنی نظریہ کی تعارف کرارہی ہے۔ مشرا کا کہنا ہے کہ متاثر،پریشان،دلت اور محروم طبقہ کے ساتھ کانگریس ہمیشہ سے ناانصافی کرتی آرہی ہے۔ پھول سنگھ بریا کو راجیہ سبھا نہ بھیج کر دلت مخالف کانگریس نے اپنا اصلی چہرہ سب کے سامنے لا دیا ہے۔ اتنا ہی نہیں ٹویٹر پر بھی مشرا نے ہیش ٹیگ کے ساتھ دلت مخالف کانگریس جملے کا استعمال کیا ہے۔ اس سے قبل سابق وزیر چودھری راکیش سنگھ چترویدی نے پھول سنگھ بریا کو راجیہ سبھا بھیجنے میں پہلی ترجیح دینے کی بات کہی تھی۔ اس کے بعد ہی دگوجئے کو لے کر سیاسی پارہ بڑھ گیا ہے۔ ایسے میں سوال اٹھتا ہے کہ کیا کانگریس دگوجئے سنگھ کی جگہ بریا کو ترجیح دیگی یا پھر دگوجئے ہی ایک مرتبہ پھر راجیہ سبھا میں اپنی آواز بلند کریںگے؟ ۔