مسلمانوں کیلئے خوش آنند خبر: طویل مدت کے بعد شہر کی دو مساجد میںادا ہوئی نماز جمعہ


اُجین12جون (نیا نظریہ بیورو)لاک ڈا¶ن کے طویل مدت کے بعد 8 جون سے شہر کی دو مساجد نمازیوں کے لئے کھو ل دی گئی ۔جو کہ مسلمانوں کے لئے ایک خوش آئند بات ہے۔ شہر کی جن دو مساجد کو نمازیوں کے لیے کھولا گیاہے ا ن میں سے ایک جامع مسجد اور دوسری کے ڈی گیٹ واقع مدینہ مسجد ہے۔لاک ڈا¶ن کی پابندیاں تو ختم ہو گئی لیکن کورونا وائرس کا خطرہ اب بھی برقرار ہے۔ حکومت کی شرائط و ضوابط کے مطابق مساجد میں آنے والے تمام نمازیوں کو ماسک کا استعمال، معاشرتی فاصلہ اور دیگر شرائط کا اہتمام کرنا لازمی ہے۔ تو وہیں مساجد کمیٹیوں کے لیے وضو خانہ، طہارت خانہ بند رکھنے فرش اور جائے نماز کی صفائی کا اہتمام یقینی بنائے رکھنا ضروری ہے۔ آج لاک ڈا¶ن کے بعد شہر کے مسلمانوں کے لئے یہ پہلا جمعہ تھا توقع کی جا رہی تھی کہ مساجد میں نماز جمعہ کے وقت نمازیوں کی تعداد میں ا ضافہ ہوگا۔ جس سے مساجد انتظامیہ کمیٹیوں کو مزید محتاط رہنے کی ضرورت ہے۔ ایک طرف جہاں حکومت کے ذریعہ دی گئی ہدایات کی پابندی تو دوسری جانب نماز جمعہ کی ادائیگی انہیں سب کا جائزہ لینے کے لئے نیا نظریہ کی ٹیم نے آج جمعہ کی نماز کے وقت ان دونوں مساجد کا دورہ کیا اور وہاں کی انتظامیہ کمیٹیوں سے ملاقات کر ان کے انتظامات کو دیکھا۔ جامعہ مسجد متولی کمیٹی کے صدر جناب شارق کے مطابق انہوں نے جمعہ کی نماز کے لئے خاص انتظامات کئے ہیں لوگ سوشل ڈسٹینسنگ کے ساتھ نماز پڑھ سکیں اس کے لئے انہوں نے فرش پر گول دائرے بنا دئے ہیں ۔ ہر نماز کے بعد مسجد کو سینیٹائز کیا جا رہا ہے ۔آج خاص طور پر نماز جمعہ کے موقع پر نمازیوں کو ماسک بھی تقسیم کئے گئے ہیں۔ وہیں دوسری جانب مدینہ مسجد کے خطیب و امام مولانا محمد علی نقشبندی نے بتایا کہ مدینہ مسجد میں نماز جمعہ کے دوران ضلع انتظامیہ کی تمام ہدایات کا خیال رکھا گیا ہے اور سوشل ڈسٹینسنگ کے ساتھ نماز ادا کی گئی ہے ساتھ ہی مسجد میں جائے نماز بھی ہٹا دی گئی ہے نماز فرش پر ہی ادا کی جا رہی ہے ۔مولانا نقشبندی کے مطابق شہر میں سنت الجماعت کی بہت بڑی تعداد ہے ضلع انتظامیہ نے مدینہ مسجد میں نماز ادائیگی کی اجازت دے کر ان کے لئے آسانی پیدا کردی ہے۔