اگلے سال حج میں اس سال والوں کو ترجیح دی جائے :عازمین حج

اگلے سال حج میں اس سال والوں کو ترجیح دی جائے :عازمین حج
بھوپال:12جون(نیانظریہ بیورو)
حج سفر کو لے کر بنے پش وپیش کے حالات کے درمیان اب حج2020کے لئے عازمین حج نے نئے مطالبات کئےہیں۔ اس سال رد کئے جارہے سفر کو دیکھتے ہوئے مطالبہ کیا جارہا ہے کہ اگلے سال حج کمیٹی ان درخواست دہندگان کو سفر پر جانے کا موقع پہلے دے۔ جن کا انتخاب اس بار حج کے لئے ہوچکا ہے۔سعودی عرب حکومت سے معقول جواب نہ ملنے کے بعد سینٹرل حج کمیٹی نے حج عازمین سے اپنی جمع کی گئی رقم واپس لینے کی اپیل کی ہے۔ اس وجہ سے تمام عازمین کو درخواست دینے کے لئے کہا ہے۔ سینٹرل حج کمیٹی کے اس فرمان کو ریاستی حج کمیٹی نے بھی دہراتے ہوئے پیسہ واپس لینے کے لئے درخواست طلب کی ہے۔ لیکن حج عازمین کا کہنا ہے کہ جب کمیٹی کے پاس حاجیوں کے بینک کھاتوں سے لے کر باقی ساری معلومات موجود ہیں تو پھر اس طرح درخواست جمع کرنے کے لئے کیوں کہا جارہا ہے۔ حج عازمین سعودی عرب سے آرہی ان خبروں کا حوالہ دے رہے ہیں جن میں محدود تعداد میں حج پرمیشن کے امکانات پر غور کیا جارہا ہے۔ سینٹرل حج کمیٹی کے فرمان کو کسی طرح کی سازش قرار دے رہے ہیں۔ وہیں بڑی تعداد میں عازمین نے حج کمیٹی کے سامنے یہ بھی تجویز رکھی ہے کہ ان کا منتخب کیا ہوا نام منسوخ کرنے کے بدلے وہ یہ یقین دہانی چاہتے ہیں کہ اگلے سال حج کے لئے ان کا نام بغیر قراة کے ریزو فہرست میں رکھا جائے۔ حج عازمین کا کہنا ہے کہ اس کے لئے کمیٹی کو ملک اور ریاست کا کوٹا بڑھانے کی مشقت کرنی چاہئے۔ وہیں کچھ عازمین اس بات کو بھی دہرارہے ہیں کہ کوٹا نہ بڑھ پانے کے حالت میں کمیٹی اگلے سال نئے سرے سے درخواست نہ طلب کرے اور اس سال کے منتخب عازمین کو ہی حج کا موقع مہیا کرائے۔ اس دوران منتخب عازمین میں سے منسوخ ہونے والے عازمین کی بھرپائی ویٹنگ لسٹ کے عازمین سے کی جاسکتی ہے۔
باکس:
درخواست سے ہوتی ہے بڑی کمائی:
ہندوستان کو ملنے والے سالانہ حج کوٹہ تقریباً 1لاک 35ہزار سیٹوں کا ہے۔ اس سے دس گنا تعداد میں درخواست جمع ہوتی ہیں۔ ریاستی حج کمیٹی کو ملنے والے درخواست کی تعداد بھی 15سے 20ہزار تک ہوتی رہی ہے۔ جبکہ یہاں کا کوٹہ چار ساڑھے چار ہزار سے زیادہ نہیں ہوتا۔ کمیٹی درخواست کی فیس کے نام پر فی عازمین سے 300روپے وصول کرتی ہے۔ اس لحاظ سے کمیٹی کو سالانہ کروڑوں کی کمائی ہوتی ہے۔