بی جے پی نے جمہوریت کا قتل کیاہے :اجے سنگھ


بھوپال:11جون(نیانظریہ بیورو)
وزیراعلیٰ شیوراج سنگھ چوہان کا آڈیو وائرل ہوتے ہی پوری کانگریس شیوراج سنگھ سمیت بی جے پی کی قیادت پر حملہ آور ہوگئی ہے۔ سابق رہنما حزب مخالف اجے سنگھ اور سابق وزیرسجن سنگھ ورما نے میڈیا کو خطاب کرتے ہوئے کہا کہ شیوراج سنگھ کے آڈیو سے سابق وزیراعلیٰ کمل ناتھ کاالزام سچ ثابت ہوگیا ہے۔ اس معاملے کو لے کر عوام کے سامنے جائیںگے، ساتھ ہی عدالت بھی جائیںگے۔ سجن سنگھ ورما نے مزید کہا کہ اگر بی جے پی کو جمہوریت کا قتل ہی کرنا ہے تو اڈانی امبانی کو ایک ایک ریاست سونپ دے اور تمام حکومتیں گرادیں۔ اسمبلی انتخابات اور ریاست میں ہونے والے ضمنی انتخابات کو دیکھتے ہوئے بی جے پی کو گھیرنے کے لئے کانگریس شیوراج سنگھ کے آڈیو کو مدعہ بنارہی ہے۔
سابق رہنماحزب مخالف اجے سنگھ اور سابق وزیر سجن سنگھ نے بی جے پی پرسادھا نشانہ:
اجے سنگھ نے کہا کہ ملک میں پہلا کورونا مثبت مریض 30جنوری کو ملاتھا، 20مارچ کو مدھیہ پردیش کی حکومت گرتی ہے۔ اور22مارچ کو جنتاکرفیو کا اعلان ہوجاتا ہے اور 23مارچ کو وزیراعلیٰ کے طورپر شیوراج سنگھ حلف لیتے ہیں۔ اس کے بعد پورے ملک میں لاک ڈاﺅن نافذکردیا جاتا ہے۔ اس سے واضح ہوتا ہے کہ وزیراعظم نریندر مودی کو عوام کی فکر ہی نہیں تھی۔ انہیں اپنی طاقت ٹرمپ کو دکھانی تھی اور مدھیہ پردیش کی حکومت گرانی تھی۔