بی جے پی میں سندھیا کو خود کا وجود بنانے کی مشقت کرنی ہوگی: پی سی شرما


بھوپال:11جون(نیانظریہ بیورو)
مدھیہ پردیش میں کانگریس اور بی جے پی کے درمیان سیاسی حملوں میں اب سندھیا کی تصویر بھی اب خبربن گئی ہے۔ جس میں اپنے ہی علاقے میں لگے بی جے پی کے پوسٹر سے سندھیا غائب ہیں۔جس پر ریاست کے سابق رابطہ عامہ وزیر پی سی شرما نے طنز کسا ہے۔ انہوں نے کہا کہ سندھیا کو بی جے پی میں عزت نہیں مل رہی ہے۔ بی جے پی میں سندھیا کو اپنی وجود کی لڑائی لڑنے ہوگی۔ پی سی شرمانے کہا کہ کانگریس میں وہ ٹاپ 3لیڈران میں شمار تھے، جس میں کمل ناتھ ،دگوجئے سنگھ اور خود سندھیا شامل تھے۔ لیکن آج ان کے علاقے میں کئی بی جے پی لیڈران جیسے نریندر سنگھ تومر اور نروتم مشرا کے ساتھ ہی وی ڈی شرما ہیں جن میں انہیں جگہ بنانی ہوگی۔ دراصل مرکزی وزیر نریندر سنگھ تومر اور ممبر پارلیمنٹ وویک نارائن شیزولکر کی سالگرہ کے موقع پر پوسٹر لگائے ہیں۔ ان پوسٹروں میں بی جے پی کے تمام بڑے لیڈران کے فوٹو لگائے گئے ہیں، لیکن ان پوسٹروں میں جیوتی رادتیہ سندھیا کا فوٹو غائب ہے۔ ایسا پہلی بار نہیں ہوا ہے اس سے قبل بھی بی جے پی کے کئی پوسٹروں میں سندھیا کو جگہ نہیں دی گئی ہے۔ غورطلب ہے کہ مدھیہ پردیش کے گلیاروں میں بی جے پی کے ہورڈنگ اور اشتہار لگ رہے ہیں، جن میں مسلسل 3دن سے سندھیا غائب ہیں ۔ لوگوں کے دل میں یہ سوال آرہے ہیں کہ کیا واقعی باربار غلطی ہورہی ہے یا پھر بی جے پی لیڈران سندھیا کو اپنانے کو ہی تیار نہیں ہیں۔