کانگریسی اپنے ایم ایل ایز کو خود مطمئن نہیں کرپائے ،دوسروں پر الزام کیوں؟:کیلاش وجے ورگیہ

وائرل آڈیو پر جواب:

بھوپال:11جون(نیانظریہ بیورو)
مدھیہ پردیش میں شروع ہوئے وائرل آڈیو پر بی جے پی کے قومی جنرلسکریٹری کیلاش وجے ورگیہ نے اپنا ردعمل دیا ہے۔ وجے ورگیہ نے کہا کہ آڈیو پوری طرح سے مینوفیکچر ہے۔ ہر پارٹی اپنے اعلیٰ کمان سے پوچھ کرہی کام کرتی ہے۔ وہیں انہوں نے ضمنی انتخابات پر بڑا دعویٰ کرتے ہوئے کہا کہ بی جے پی پوری24سیٹیں جیتے گی۔ دراصل جمعرات کو صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے بی جے پی کے قومی جنرل سکریٹری کیلاش وجے ورگیہ نے کانگریس پر حملہ بولا ۔ وجے ورگیہ نے کہا کہ کانگریس کے ایک لیڈر ہے،جن کی عادت شور کرنے کی ہے ۔ چوہے کو چندی مل جاتی ہے تو وہ بجاج کھانا کھول ہی لیتا ہے۔ اور کانگریس پر حملہ بولتے ہوئے انہوں نے کہا کہ کانگریس پارٹی کے اندر کے لوگوں کو اپنی ہی پارٹی کی قیادت پر یقین نہیں ہے۔ وہ اپنی ہی پارٹی کے بیان بازی سے کانگریس چھوڑ کر بھاگ رہے ہیں۔ اس طرح اگر کانگریسی خود اپنی پارٹی کے ایم ایل ایز کو نہیں سنبھال پارہے ہیں تو اس میں کسی دوسرے کی کیا غلطی ہے؟ وہیں انہوں نے کانگریس پر طنز کستے ہوئے کہا کہ آج جو بھی کانگریس چھوڑ کر بی جے پی میں آیا ہے وہ ایم ایل اے امول کا دودھ نہیں پیتے تھے۔
کانگریسی برباد کرتے ہیں کسی کا بھی وقت:کانگریس کے وائرل ویڈیو پر جیل جانے کی بات پر وجے ورگیہ نے کہا کہ کانگریس کے لوگ کافی فری ہیں۔ وہ کسی کا بھی وقت برباد کرسکتے ہیں۔ ایسے میں وہ جہاں جانا چاہیں ،جا سکتے ہیں۔اسی درمیان ریاست میں تیزی سے بڑھ رہے کورونا وباءپر بولتے ہوئے وجے ورگیہ نے کہا کہ بی جے پی نے بیداری مہم شروع کی ہے۔ جس کے ذریعہ لوگوں کو بیدار کیا جائے گا۔ کورونا ہمارے ساتھ رہے گا اور ہمیں بھی اس کے ساتھ ہی رہنا ہوگا۔